150

1997ء میں محکمہ تعلیم کے برطرف ملازمین بحال

پشاور ۔ پشاور ہائی کورٹ کے جسٹس روح الامین اور جسٹس اکرام اللہ پر مشتمل دو رکنی بنچ نے 1997 ء میں نوکری سے برخاست کئے جانے والے محکمہ تعلیم مردان کے 150 اہلکاروں کی بحالی کے احکامات جاری کردیئے ہیں ‘ یہ احکامات گزشتہ روز عدالت عالیہ کے دو رکنی بنچ نے ثمینہ قاضی وغیرہ کی درخواست پر دائر کئے ‘ خالد رحمان ایڈووکٹ نے درخواست کی پیروی کی ۔

عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار 1996 ء میں محکمہ تعلیم میں بھرتی ہوئے اور 1997 ء میں حکومت نے انہیں برخاست کیا جن میں ان ٹرینڈ ملازمین بھی شامل تھے ‘ 2008ء میں حکومت نے ان ملازمین کی بحالی کا آرڈنینس جاری کیا 2012ء میں حکومت نے ان ٹرینڈ اساتذہ کو بھی بحال کرنے کا فیصلہ کیا ‘ تاہم درخواست گزاروں کو تاحال بحال نہیں کیا گیا جس پر عدالت نے انہیں بحال کرنے کے احکامات جاری کردیئے ۔