703

پشاور میں شادی کا جھانسہ دے کر دوشیزہ سے زیادتی

پشاور۔پشاور کے نواحی علاقہ داؤدزئی میں جوانسال لڑکی کو شادی کا جھانسہ دے کر زیادتی کا نشانہ بنادیا گیاجبکہ لڑکی سے طلائی بالیاں اور ہزاروں کی نقدی چھین کر اسے دریا میں گرا دیاگیاتاہم مقامی افراد نے اپنی مدد آپ کے تحت لڑکی کو بحفاظت دریا سے نکال لیا واقعہ کی اطلاع ملنے کے بعد پولیس نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کرلیا اور متاثرہ لڑکی کو وومن کرائسز سنٹر حیات آباد منتقل کردیا۔

ابتدائی تفتیش کے دوران معلوم ہوا ہے کہ دوشیرہ کا ملزم کے ساتھ گزشتہ 5 ماہ سے تعلق تھا پولیس کے مطابق ارم ناز دختر بشیر سکنہ میوڑہ نے تھانہ داؤدزئی پولیس کو بتایا ’’ تقریباً 5ماہ قبل شکر پورہ کے رہائشی نوجوان گل باز ولد وزیر کے ساتھ میری دوستی ہوئی تھی اور ایک دن وہ مجھے خزانہ میں ایک خالی مکان میں لے گیا جہاں اس نے مجھے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ، بعد ازاں مجھے معلوم ہوا کہ میں حاملہ ہوگئی ہوں جس کے بعد میں نے گل باز سے کہاکہ میں تمہارے بچے کی ماں بننے والی ہوں۔

لہٰذا مجھ سے شادی کرلو، لیکن وہ مختلف بہانوں سے کام لے رہا تھا اور گزشتہ شام گل باز نے میرے ساتھ شادی کی حامی بھرتے ہوئے مجھے مہاجر کیمپ کے قریب سے بہنے والے دریائے کابل کے کنارے بلا لیا، میں جب وہاں گئی تو گل باز نے ایک بار پھر مجھے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور بعد ازاں مجھے دریا کے پل پر لے گیا جہاں اس نے مجھ سے 5 ہزار کی نقدی اور آدھا تولہ طلائی بالیاں لینے کے بعد دریا میں گرا دیا تاہم چیخ و پکار پر دریا کنارے بیٹھے افراد نے مجھے بچا لیا جبکہ ملزم واردات کے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا‘‘۔

پولیس کے مطابق اطلاع کے بعد ملزم گل باز کو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ ابتدائی تفتیش کے دوران معلوم ہوا ہے متاثرہ لڑکی کا حمل ضائع ہوچکا ہے ، انہوں نے بتایا کہ لڑکی کو حیات آباد میں واقع وومن کرائسز سنٹر منتقل کردیا گیا ہے اور ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرکے مزید تفتیش شروع کردی گئی ہے۔