151

پاکستان میں کوئی فوجی اڈہ تعمیر نہیں کر رہے، چین کی وضاحت

چین نے پاکستان میں فوجی اڈے کی تعمیر سے متعلق خبروں کی تردید کرتے ہوئے ہوئے کہا ہے کہ اس قسم کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہے۔

بیجنگ میں ایک پریس بریفنگ کے دوران چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان لو کینگ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں فوجی اڈہ تعمیر کرنے کے حوالے سے کسی قسم کی منصوبہ بندی نہیں کر رہے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ میرا خیال ہے کہ اس حوالے سے دنیا کے دیگر ممالک کو بہت زیادہ اندازے لگانے کی ضرورت نہیں ہے۔

لو کینگ نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ ون بیلٹ ون روڈ وژن کا اہم حصہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ چین اور پاکستان سی پیک منصوبے کے روٹ میں آنے والے ممالک کے مشترکہ مفادات کے لیے کوششیں کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ 4 جنوری کو پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے ایک بریس بریفنگ کے دوران کہا تھا کہ چین کی جانب سے گوادر کے قریب فوجی اڈے کی تعمیر کے حوالے سے کسی قسم کا منصوبہ پیش نہیں کیا گیا۔

ترجمان پاکستانی دفتر خارجہ کا کہنا تھا یہ سب کچھ سی پیک اور پاکستان و چین کے مضبوط تعلقات کے خلاف پروپیگنڈا ہے۔

گزشتہ روز بھی چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے مثال قربانیاں دی ہیں اور دنیا کو دہشت گردی کے خاتمے کے لیے ایک دوسرے پر انگلیاں اٹھانے کے بجائے تعاون کو فروغ دینا چاہیے۔