بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پانامہ کیس وزیراعظم کی ذات یا سیاسی جماعتوں تک محدود نہیں ہے، سراج الحق

پانامہ کیس وزیراعظم کی ذات یا سیاسی جماعتوں تک محدود نہیں ہے، سراج الحق


اسلام آباد۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ پانامہ کیس وزیراعظم کی ذات یا سیاسی جماعتوں تک محدود نہیں ہے، اس کیس کے فیصلہ پر پاکستان کے مستقبل کا انحصار ہے، پانامہ کیس کا جتنی کم مدت میں فیصلہ ہو جائے قوم کے لئے اتنا ہی بہتر ہے، وزیراعظم خود عدالت میں آ کر تمام سوالات اور کنفیوژن کو دور کر سکتے ہیں، ہم کرپشن کے خلاف عدالتوں کے اندر بھی اپنے دلائل کے ساتھ ہیں اور عوام کو بھی آگاہ کر رہے ہیں جو بھی اپنی ناجائز دولت کو چھپانے کی خواہش رکھتا ہے اس کے لئے پانامہ ایک بہترین جگہ ہے۔ ان خیالات کا اظہار سینیٹر سراج الحق نے سپریم کورٹ کے باہر پانامہ لیکس کیس کی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کیا۔ سراج الحق کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ (ن) کے وکیل کمزور کیس لڑ رہے ہیں، حکومت لفاظتی کے پیچھے چھپنا چاہتی ہے، آج کے دلائل سن کر اس بات کی اشد ضرورت محسوس ہوتی ہے۔

وزیراعظم میاں نوازشریف خود عدالت میں آئیں، وہ خود تمام سوالات اور کنفیوژن کو دور کر سکتے ہیں۔ ان کا وکیل نہیں کر سکتا۔ یہ کیس صرف وزیراعظم کی ذات تک یا سیاسی جماعتوں تک محدود نہیں ہے۔ اس کیس کے فیصلہ پر پاکستان کے مستقبل کا انحصار ہے۔ پاکستان کے 20 کروڑ عوام کا انحصار ہے۔ اب تک وہ کلیئر نہیں کر سکے کہ جو مل انہوں نے لگائی ہے ان کے لئے پیسہ کہاں سے آیا؟یہ بھی نہیں بتا سکے کہ لندن میں جو جائیدادیں ہیں ان کے لئے پیسہ کہاں سے آیا اور ان کے بچوں کے نام پاناما لیکس میں ہیں۔ اب تک ان پر تو بات ہی نہیں کر سکے۔ میں سمجھتا ہوں ہم نے جو درخواست دی ہے کہ نوازشریف کو خود آنا چاہئے ان کا کہنا تھا کہ دنیا کے بہت سارے حکمرانوں کے نام آئے ہیں۔ اکثر حکمرانوں نے خود اسمبلی میں جا کر اپنی وضاحت کی ہے اپنے کام کے حوالے سے قوم سے معافی مانگی ہے۔ استعفیٰ بھی دیا ہے یا پارٹی نے خود جو لوگ ملوث ہیں ان کا احتساب کیا ہے یہاں نہ کسی نے استعفیٰ دیا نہ پارٹی کے اندر کسی نے کسی کا احتساب کیا اور نہ ہی کوئی ایسا راستہ اختیار کیا جس سے ان کی شرمندگی ظاہر ہو۔

میں سمجھتا ہوں کیس کا فیصلہ جتنی کم مدت میں ہو جائے قوم کے لئے اتنا ہی بہتر ہے۔ اس لئے کہ اس پر کلین اور کرپشن سے فری پاکستان کا انحصار ہے، دارومدار ہے۔ ہم کرپشن کے خلاف عدالتوں کے اندر بھی اپنے دلائل کے ساتھ ہیں اور عوام کو بھی آگاہ کر رہے ہیں کہ آئندہ کے لئے کم از کم جب بھی فیصلہ ہو تو ان لوگوں کے بارے میں جن کے دامن پر کرپشن کے دھبے ہیں اب تو دھبے نہیں بڑے بڑے پہاڑ ہیں جو نظر آ رہے ہیں، ان کو ہمیشہ کے لئے مسترد کریں۔ سراج الحق کا کہنا تھا کہ لوگ پانامہ میں اس لئے پیسہ رکھتے ہیں کہ دنیا بھر میں چھپانے کی جگہ پاناما ہی ہے جو بھی اپنی ناجائز دولت کو چھپانے کی خواہش رکھتا ہے ان کے لئے پانامہ ایک بہترین جگہ ہے۔