بریکنگ نیوز
Home / صحت / ماں کے بلڈپریشر سے بچے کی جنس کا تعین

ماں کے بلڈپریشر سے بچے کی جنس کا تعین


ٹورنٹو۔ چین میں ہونے والے ایک دلچسپ سروے سے حیرت انگیز نتائج سامنے آئے ہیں جن کے مطابق بالکل ابتدائی مرحلے میں اور حمل ٹھہرنے سے پہلے ہی معلوم کیا جاسکتا ہے کہ خاتون لڑکے کو جنم دیں گی یا کسی لڑکی کو۔

ماہرین کے مطابق اگر یہ نتائج دوسرے اسی نوعیت کے مطالعات میں بھی درست ثابت ہوئے تو یہ ایک حیرت انگیز دریافت ہوگی۔ حال ہی میں چین میں کیے گئے ایک مطالعاتی سروے سے معلوم ہوا ہے کہ ماں کا اوسط بلڈ پریشر بچے کی جنس کا پتا دے سکتا ہے۔ تاہم بعض سائنسدانوں کا خیال ہے ماں کی بہترین غذا لڑکے کی وجہ بنتی ہے اور اگر غذا کم توانائی والی ہو تو یہ لڑکی کی پیدائش کی وجہ بن سکتی ہے۔ لیکن اس مفروضے کی صداقت کے لیے بھی طویل مطالعہ درکار ہے۔

لیکن اب ’’امریکن جرنل آف ہائپرٹینشن‘‘ میں شائع ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگر کسی ماں کا اوسط بلڈ پریشر103.3 رہے تو لڑکی اور اگر اوسط بلڈپریشر 106.0 ہو تو لڑکا پیدا ہونےکے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔