بریکنگ نیوز
Home / سائنس و ٹیکنالوجی / 2016: انسانی تاریخ کا دوسرا گرم ترین سال

2016: انسانی تاریخ کا دوسرا گرم ترین سال

ہیوسٹن۔ ناسا، نوآ اور عالمی موسمیاتی ادارے (ڈبلیو ایم او) کے ماہرین نے کہا ہے کہ 2016 انسانی تاریخ کا ایک اور گرم ترین سال ثابت ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق 2016 کا اوسط درجہ حرارت 2015 کے اوسط سے 0.07 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ رہا جبکہ یہ انسانی تاریخ میں 1880 کے بعد دوسرا گرم ترین سال بھی ثابت ہوا۔ علاوہ ازیں 1961 سے 1990 تک کے طویل مدتی عالمی اوسط درجہ حرارت کے مقابلے میں بھی یہ سال 0.77 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ گرم رہا۔

اس پورے سال کے دوران خطِ استواء سے لے کر قطبین تک، دنیا کے کم و بیش ہر حصے میں معمول سے زیادہ درجہ حرارت کا غلبہ رہا جس کی ایک بڑی وجہ ماحولیاتی مظہر ’’ایل نینو‘‘ (El Niño) کو قرار دیا جارہا ہے۔ البتہ اس ضمن میں انسانی سرگرمیوں خاص طور پر کاربن ڈائی آکسائیڈ کے بے تحاشا اخراج کو بھی دوسری اہم ترین وجہ بتایا جارہا ہے۔