بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نوازشریف نے ثبوتوں کے انبار کے بجائے قانونی نقاط کے انبار لگا دیئے ہیں، عمران خان

نوازشریف نے ثبوتوں کے انبار کے بجائے قانونی نقاط کے انبار لگا دیئے ہیں، عمران خان

اسلام آباد۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت کو پانامہ لیکس پر مقدمہ تباہی کی طرف لے جا رہا ہے،نوازشریف نے ثبوتوں کے انبار کے بجائے قانونی نقاط کے انبار لگا دیئے ہیں، اگر حکومت سچی ہے تو جرمن اخبار بی بی سی اور آئی سی آئی جے کو عدالت میں لے کر جائیں ،خواجہ آصف سے پوچھتاہوں کہ وہ لندن فلیٹ کے بارے میں کل سچ بول رہے تھے یا اب سچ بول رہے ہیں؟ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ان خیالات کا اظہار سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں کیا۔ عمران خان نے عدالت کے ریماکس بتاتے ہوئے کہاکہ عدالت کہہ رہی ہے کہ نوازشریف نے ثبوتوں کے انبار کے بجائے قانونی نقا ط کے انبار لگا دیئے ہیں۔

آئی سی آئی جے نے اپنی دستاویزات میں تصدیق کی ہے کہ مریم نواز لندن مے فیئر فلیٹ کی مالکن ہیں اوراب جرمن اخبار سوچے ریل برگ نے بھی تصدیق کی ہے کہ مریم نواز ہی مے فیئر فلیٹ کی مالکہ ہیں۔ آگر یہ ثابت ہو گیا تو اس کا مطلب ہو گا کہ قطر ی شہزادے کا خط فراڈ ہے۔ حکومتی وکیل کہہ رہا ہے کہ مے فیئر کے فلیٹ حسین نواز کا ہے جبکہ آئی سی آئی جے کہہ رہی ہے کہ مریم نواز کے ہیں۔ اس سے حکومت کی طرف سے عدالت میں جمع کرائے گئے قطری خط بھی فراڈ ہو جائے گا اور ساتھ میں حسین نواز کی طرف سے جمع کرائے گئے ٹرسٹ ڈیل بھی فراڈ ثابت ہو جائے گا۔ حکومت کا پانامہ لیکس پر مقدمہ تباہی کی طرف لے جا رہا ہے۔ اگر حکومت سچی ہے تو جرمن اخبار بی بی سی اور آئی سی آئی جے کو عدالت میں لے کر جائیں جو کہہ رہے ہیں کہ 13سال سے نوازشریف خاندان ان فلیٹوں کا مالک ہے۔ مسلم لیگ (ن) میرے اوپر حملے کرنے کے بجائے ان اداروں کو عدالت میں لے کر جائے جنہوں نے ان دستاویزات کو شائع کیا ہے۔

حکومت نے سرکاری ادارے اے پی پی کو غلط استعمال کیا اور خبر لگائی مگر بی بی سی نے اس کی تردید کی۔ عمران خان نے کہا کہ پانامہ اللہ تعالیٰ کی طرف سے نوازشریف کی پکڑ ہے۔ اقتدار میں رہے بغیر کوئی کرپٹ نہیں ہوتا ہے۔ خواجہ آصف کہتے تھے کہ مے فیئر کے فلیٹ 1990ء میں خریدے گئے ہیں ان سے پوچھتا ہوں کہ وہ کل سچ بول رہے تھے یا اب سچ بول رہے ہیں۔ پہلے نوازشریف کہتے تھے کہ ہم اکٹھے کاروبار کرتے ہیں مگر اب کہہ رہے ہیں کہ علیحدہ کاروبار کر رہے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ تنظیمی ڈھانچے کے بغیر کس طرح بڑے بڑے جلسے کر رہے ہیں۔ ہم اگلاالیکشن میں بھی تنظیمی ڈھانچے کے بغیر لڑیں گے اور جیتیں گے۔