بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / ابتدائی و ثانوی تعلیمی بورڈ پشاور کے 21شعبوں میں اصلاحات

ابتدائی و ثانوی تعلیمی بورڈ پشاور کے 21شعبوں میں اصلاحات

ثانوی و اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ پشاورکو پرائم بورڈ کی حیثیت حاصل ہے ٗ پشاور بورڈ کے جہاں اخراجات دیگر بورڈوں سے زیادہ ہیں ‘وہیں آمدنی میں بھی پشاور بورڈ ٹاپ پر ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پشاور بورڈ میں اصلاحات کا عمل ہمہ وقت جاری رہتا ہے تاہم 2011ء سے 2016ء تک پشاور تعلیمی بورڈ میں جو اصلاحات ٗ نئی پالیسیاں اور اقدامات کا بیڑہ اٹھایا گیا ‘اس کی مثال پشاور تعلیمی بورڈ کے قیام کے 53سال میں نظر نہیں آتی ۔پشاور تعلیمی بورڈ کی موجودہ انتظامیہ نے 21اہم شعبوں کی جانب نہ صرف توجہ دی بلکہ ان پر عمل درآمد کرکے خود کو دیگر تعلیمی بورڈز سے ممتاز کیا ۔

ان اصلاحات میں (1)بورڈ کے 53سالہ ریکارڈ کی سکیننگ اور تمام دستاویزات کو محفوظ بنانا (2)خود کار طریقے سے ری ٹوٹلنگ (3)گروپ ایس ایم ایس سسٹم (4)آن لائن انرولمنٹ سسٹم (5)آن لائن رجسٹریشن سسٹم (6)میٹرک اور انٹر میڈیٹ کے پرچوں کی او ایم آر پر چیکنگ(7)اساتذہ کو آن لائن ادائیگیاں(8)مارکنگ اور سکروٹنی ہال میں سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب (9)مارکنگ ہال میں بائیو میٹرک سسٹم کے ذریعے داخلہ (10)آئی سی ٹی ڈویلپمنٹ سیل کا قیام (11)ریگولیٹری اتھارٹی کیلئے آن لائن سسٹم (12)امتحانی ہالوں کیلئے آن لائن سسٹم (13)ایس ڈی ای او ٗ اے ای او اور ڈی ای او آفس سے اساتذہ کی ڈیوٹی کیلئے آن لائن سفارشات (14)بورڈ ملازمین کیلئے بائیو میٹرک حاضری کا نظام (15) سرٹیفیکٹ اور رجسٹریشن شعبوں کی اپ گریڈیشن (16) 1961ء سے اب تک کے تمام سرٹیفیکیٹس کی کمپیوٹرائزیشن (17)تمام سکولوں اور کالجوں کو رول نمبروں کی آن لائن فراہمی (18)کیش مینجمنٹ سلوشن آن لائن رسیدیں (19)تمام سکولوں کے داخلے آن لائن (20)گزٹ کی سی ڈیز میں فراہمی اور (21) مستقبل کا وژن شامل ہیں ۔سکیننگ اور پرانے ریکارڈ کو محفوظ بنانے کے تحت دستاویزات کی تصدیق اب گھنٹوں میں ہوتی ہے ٗ پرانے ریکارڈ کو محفوظ کر دیا گیا ہے اور پرانے ریکارڈ کو ایک کمپیوٹر پر ایک سکینڈ میں دیکھا جا سکتا ہے ۔پرانے ریکارڈ کے تحت15لاکھ 92ہزار ہزار کیا ڈیٹا کمپیوٹرائزڈ کیا گیا ۔سالانہ امتحانات کے نتائج کے 15دنوں میں ری ٹوٹلنگ کی سہولیات کی فراہمی اور ری ٹوٹلنگ کے نتائج ایس ایم ایس کے ذریعے طلبہ کو بھجوائے جاتے ہیں ۔گروپ ایس ایم ایس سسٹم کے تحت طلبہ کو ایک بٹن دبانے سے تمام معلومات فراہم کی جاتی ہیں جبکہ ایک لاکھ مسیج بھجوانے پر صرف 15ہزار اخراجات آتے ہیں ۔تعلیمی بورڈ پشاور کا تمام ڈیٹا آن لائن دستیاب ہے ۔ پشاور بورڈ کو ہر سال قریباً 2لاکھ 50ہزار طلباء و طالبات کا ڈیٹا موصول ہوتا ہے ۔پشاور بورڈ میں کو دوسرے تعلیمی بورڈز سے منفرد مقام دلوانے میں او ایم آر بیسڈ مارکنگ سسٹم کی بنیادی حیثیت حاصل ہے جس کے تحت 24 گھنٹوں میں ایک لاکھ پرچے چیک کئے جا سکتے ہیں اور اس ایکسرسائز میں غلطی کی گنجائش زیرو فیصد ہے ۔