بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / ترکی نے فتح اللہ گولن کی حوالگی کیلئے امریکہ کو مزید دلائل فراہم کردیئے

ترکی نے فتح اللہ گولن کی حوالگی کیلئے امریکہ کو مزید دلائل فراہم کردیئے


انقرہ ۔ ترکی نے 15 جولائی کی ناکام بغاوت میں ملوث دہشت گرد تنظیم فیتو کے سر غنہ فتح اللہ گولن کو حوالے کرنے کیلئے امریکہ کو مزید دلائل فراہم کردیئے ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ازمیراٹارنی جنرل کے دفتر کی طرف سے تیار فیتو فرد جرم میں موجود خفیہ گوہوں نے یہ بتایا ہے کہ انقلاب کے احکامات بذات خود گولن نے دئیے ہیں ۔ گواہوں کے بیانات کا ترجمہ کرتے ہوئے انھیں امریکہ کی وزارت انصاف کو بھیج دیا گیا ہے ۔

گزگن کوڈ نامی خفیہ گواہ نے واضح الفاظ میں یہ بتایا ہے کہ ترک مسلح افواج کے ملازم عادل اوکسوز نے 12 جولائی 2016 کو امریکہ جا کر انقلابی منصوبوں کو گولن کی توثیق کے بعد ان پر عمل درآمد شروع کیا تھا ۔ شپکا کوڈ نامی گواہ نے بھی بتایا ہے کہ انقلاب کے منصوبے کو انقرہ کے ایک مکان میں تیار کیا گیا تھا اور عادل اوکسوز اسیامریکہ گولن کے پاس لے کر گئے تھے اور انھوں نے اس کی منظوری دی تھی ۔

انقلاب سے قبل ازمیر میں اس انقلاب کی مخالفت کر سکنے والے جرنیلوں کی لسٹ اور انقلابی کاروائی میں شامل افرادکی لسٹیں تیار کی گئیں جنھیں 13 جولائی کے دن شام چار بجے ایک پیغام کے ذریعے ہمیں بھیجا گیا ۔15 جولائی کے انقلاب سے ہمیں دو روز قبل مطلع کیا گیا تھا ۔ اوکسوز کے فلائٹ نمبر اور سیٹ نمبر تک امریکی حکام کو بھیج دئیے گئے ہیں ۔