بریکنگ نیوز
Home / بزنس / تجارتی خسارے میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے، موڈیز

تجارتی خسارے میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے، موڈیز


کراچی ۔عالمی ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے پاکستان کو تجویز دی ہے کہ وہ بڑھتے ہوئے درآمدی بل کو کم کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات کرے۔ سی پیک منصوبہ ملک کے لئے بہت اہم ہے جس سے معاشی ترقی میں اضافہ ہوگا، لیکن ساتھ ہی تجارتی اور جاری کھاتوں کے خسارے میں اضافہ تشویش کا باعث بن سکتا ہے ،موڈیز انویسٹرز سروس کی جاری رپورٹ کے مطابق اسٹیٹ بینک نے گزشتہ ہفتے درآمدات پر قابو پانے کے لئے 100 فیصد کیش مارجن کا اطلاق کیا ، یعنی کمپنیاں گاڑیاں، جیولری، الیکٹرونکس مصنوعات، موبائل فونز اور دیگر اشیا بیرون ممالک سے منگوانے سے قبل اتنی ہی مالیت کے ڈالر مرکزی بینک میں جمع کرانے کی پابند ہوں گی،موڈیز کا کہنا ہے کہ یہ اقدام غیر ضروری درآمدات کو روکنے کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے ، مگر اسٹیٹ بینک کی اس پابندی سے غیر قانونی طریقے سے اشیا کی نقل و حمل میں اضافے کا خدشہ ہے۔

، رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ عالمی منڈی میں خام تیل کی بڑھتی قیمتیں اور درآمدات میں اضافے سے تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے۔ سی پیک کی وجہ سے ملک میں گوادر سے کاشغر تک ترقیاتی منصوبوں کے لئے کیمیکل مشینری، پلانٹس اور دیگر پرزہ جات کی درآمدات سے تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے ، عالمی ریٹنگ کے ادارے موڈیز نے خبردار کیا ہے کہ درآمدی بلوں کی ادائیگی کے لئے حکومت پاکستان کو مزید قرض لینا پڑسکتا ہے جس سے سود اور قرضوں کی ادائیگیوں میں مزید اضافہ ہو گا، جو مستقبل میں معیشت کے لئے مزید بھاری پڑسکتا ہے ، ادائیگیوں کے عدم توازن یعنی ہماری بیرونی ملک سے آمدنی کم اوراخراجات زیادہ ہیں جس سے جاری کھاتوں کے خسارے میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔

، اسٹیٹ بینک کی حالیہ رپورٹ کے مطابق 7 ماہ میں جاری کھاتوں کا خسارہ 90 فیصد اضافے سے 4 ارب 72 کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا ہے جبکہ گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے کے دوران یہ خسارہ 2 ارب 48 کروڑ ڈالر تھا ، دوسری جانب مالی سال 16۔2015 کے پورے سال میں جاری کھاتوں کا کْل خسارہ 3 ارب 26 کروڑ ڈالر تھا۔ موڈیز کے مطابق قرضوں میں اضافہ زرمبادلہ کے ذخائر پر بوجھ پڑ سکتا ہے ،، لیکن ساتھ ہی سی پیک منصوبے سے 50 ارب ڈالر کی سرمایا کاری سے توانائی کے بحران اور مصنوعات کی نقل حمل میں اضافہ اور دوسرے ممالک کی جانب سے سرمایہ کاری میں اضافے سے معیشت کو سہرا ملنے کا امکان ہے۔