بریکنگ نیوز


مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین 19ماہ بعد رہا
کراچی۔کرپشن کیس میں درخواست ضمانت منظور ہونے کے بعد جمعہ کو سابق مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین تقریباً19ماہ بعد رہاکردیاگیاہے، رہائی کے بعد ڈاکٹرعاصم ضاء الدین اسپتال کلفٹن پہنچ گئے۔بلاول بھٹوزرداری نے ڈاکٹرعاصم کو رہائی پر مبارک باد دی ہے ۔تفصیلات کے مطابق 2 روز قبل سندھ ہائی کورٹ نے 479 ارب روپے کی کرپشن سے متعلق دو کیسز میں ڈاکٹر عاصم کی درخواست ضمانت منظور کرتے ہوئے انہیں 50 لاکھ روپے کے مچلکے اور پاسپورٹس جمع کرانے کا حکم دیا تھا۔

گزشتہ روز ڈاکٹر عاصم کے وکلا نے اپنے موکل کی رہائی کے لیے قانونی دستاویز جمع کرائے تھے لیکن عدالت کے ناظر نے پاسپورٹ جمع نہ کرانے پر ڈاکٹر عاصم کے روبکار جاری کرنے سے انکار کردیا تھا۔ جس کے بعد معاملہ چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کے پاس بھیج دیا گیا تھا۔جمعے کی صبح ڈاکٹر عاصم کے وکلا نے دوبارہ ضمانتی کاغذات جمع کرائے، اس مرتبہ ان دستاویزات میں ڈاکٹر عاصم کے پاسپورٹس بھی شامل تھے، قانونی کارروائی مکمل ہونے کے بعد سندھ ہائی کورٹ نے ڈاکٹر عاصم کے ریلیز آرڈر جاری کردیے اور سابق مشیر پیٹرولیم ڈاکٹر عاصم کی رہائی عمل میں آئی۔ وکلا ء آرڈر لے کر جناح ہسپتال گئے جہاں زیرعلاج ڈاکٹر عاصم کو رہا کیا گیا۔رہائی کا پروانہ ملتے ہی ڈاکٹر عاصم حسین ہاتھ ہلاتے ہوئے جناح ہسپتال سے باہر آئے جہاں سے وہ بکتربندگاڑی کے ذریعے ضیا الدین اسپتال کلفٹن پہنچ گئے،جہاں ڈاکٹرزکی ٹیم نے ان کا چیک اپ کیا۔اسپتال ذرائع کے مطابق ڈاکٹرعاصم صحت یابی تک ضیاء الدین اسپتال میں ہی رہیں گے۔

رہائی کے موقع پرڈاکٹر عاصم کے وکیل انوار منصورنے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ثابت کریں گے کہ ڈاکٹر عاصم کے خلاف ریفرنس جعلی ہے۔انہوں نے کہا کہ چودھری نثار سے درخواست ہے کہ ای سی ایل کا مسئلہ حل کردیں، مسئلہ حل نہ ہوا تو ہم عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔اس ضمن میں پیرکو سندھ ہائی کورٹ میں درخواست دائر کریں گے ۔