بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / انتخابی اصلاحات کمیٹی کی تجاویزپر مشاورت مکمل

انتخابی اصلاحات کمیٹی کی تجاویزپر مشاورت مکمل


اسلام آباد۔انتخابی اصلاحات کمیٹی نے ضمنی انتخابات میں الیکٹرانیک ووٹنگ اور بائیو میٹرک مشینوں کے استعمال کو قانونی حیثیت دینے کی منظوری دیدی ہے ، الیکشن ڈرافٹ بل 2017 پر موصول ہونے والی تجاویزپر مشاورت مکمل کرکے حتمی شکل دیدی گئی ہے جسے منظوری کے بعد مین کمیٹی میں بھیجا جائے گا،سینٹ انتخابات سے ہارس ٹریڈنگ ختم کرنے کیلئے طریقہ کار تبدیل کرنے پر سیاسی جماعتیں متفق نہ ہوسکیں ،خواتین ووٹرز کی تعداد میں اضافے کیلئے نادرہ حکام اپنا پروگرام رواں ہفتے پیش کریں گے ۔انتخابی اصلاحات کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس کنونیر زاہد حامد کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا اجلاس میں کمیٹی ممبران کے علاوہ الیکشن کمیشن اور نادرہ حکام نے بھی شرکت کی اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کنوینر کمیٹی زاہد حامد نے کہاکہ کمیٹی نے الیکشن ڈرافٹ پر موصول ہونے والے 630سے زائد سفارشات پر مشاورت مکمل کر لی ہے اور آج بروزہ منگل ہونے والے اجلاس میں منظوری کے بعد مین کمیٹی میں پیش کیا جائے گا اور مین کمیٹی کی منظوری کے بعد پارلیمنٹ میں پیش کی جائے گی۔

انہوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن کی جانب سے بنائے جانے والے قوانین پر وزارت قانون اور الیکشن کمیشن کے حکام نے اپنی مشاورت شروع کر دی ہے جس کے بعد اسے کمیٹی میں پیش کیا جائے گاانہوں نے کہاکہ ذیلی کمیٹی نے آئینی ترامیم کا دوبارہ جائزہ لینا شروع کردیا ہے جس میں زیادہ تر آئینی ترامیم پر اتفاق رائے ہو گیا ہے تاہم سینٹ انتخابات سے ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے انتخابات کے طریقہ کار کو تبدیل کرکے پارٹی کی جانب سے نامزدگی پر اتفاق رائے نہ ہوسکا ہے جس پر اب مین کمیٹی میں فیصلہ کیا جائے گا۔

انہوں نے کہاکہ کمیٹی کے اراکین نے اس تجویز کو بھی منظور کیا ہے کہ اعزازی طور پر کسی بھی بورڈ کا چیرمین منتخب ہونے والے ممبران اسمبلی کو نااہل نہیں کیا جائے گاانہوں نے کہاکہ کمیٹی نے ضمنی انتخابات میں الیکٹرانیک ووٹنگ اور بائیو میٹر ک مشینوں کے استعمال کی بھی قانونی حیثیت فراہم کرنے کی منظوری دید ی ہے اور اگر ان مشینوں کی افادیت ثابت ہوگئی تو اگلے انتخابات میں اس کے استعمال کے حوالے سے قانون سازی کی جائے گی۔

انہوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن کی جانب سے یہ تجویز بھی پیش کی گئی ہے کہ اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کرانے والے اراکین اسمبلی کی مراعات بند کرنے کے ساتھ ساتھ اس کو نااہل کرنے کے بارے میں بھی الیکشن کمیشن کی جانب سے تجاویز سامنے آئی ہیں جن پر کمیٹی غور کر رہی ہے انہوں نے کہاکہ اگلے انتخابات سے قبل خواتین اور مرد ووٹرز کے درمیان موجود فرق کو ختم کرنے کیلئے نادرہ حکام کو ایک ہفتے تک جامع منصوبہ پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔