بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / سزائے موت کا ملزم 14 سال بعد رہا

سزائے موت کا ملزم 14 سال بعد رہا

اسلام آباد۔سپریم کورٹ نے ناکافی شواہد کی بناء پر سزائے موت کے ملزم کو 14 سال بعد رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے ۔پیر کو جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی ،ملزم مامون الرشید کے خلاف جڑانوالہ والا میں اشتیاق کے قتل کا الزام تھا۔ملزم کے خلاف 14 مارچ 2002 کو قتل کا مقدمہ درج ہوا تھا ،

ٹرائل کورٹ نیملزم کوسزائے موت کا حکم دیا تھا ٗ ہائیکورٹ نے ملزم کی سزائے موت کو برقراررکھا ۔ ملزم کے وکیل نے مؤقف اختیارکیا کہ ایف آئی آرمیں وقوعہ رات 12بجے جبکہ بیانات میں صبح 10بجے ظاہرکیا گیا ۔جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ ایف آئی آراورگواہان کے بیانات میں تضاد ہے، استغاثہ ملزم کیخلاف ٹھوس شواہد پیش نہ کرسکا ۔ عدالت عظمیٰ نے ناکافی شواہد پرملزم کوبری کرنے کا حکم دے دیا