بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / محکمہ داخلہ خیبر پختونخوا و منسلکہ محکموں کی سالانہ رپورٹ جاری

محکمہ داخلہ خیبر پختونخوا و منسلکہ محکموں کی سالانہ رپورٹ جاری


پشاور ۔محکمہ داخلہ و قبائلی امورخیبر پختونخوا نے منسلکہ محکموں پولیس، جیل خانہ جات،پراسیکیوشن ڈائریکٹوریٹ ، نظامت بحالی و آزمائش اور نظامت صوبائی سیفٹی اینڈ پولیس کمپلینٹ کمیشن کی سالانہ جائزہ رپورٹ جاری کردی۔رپورٹ میں صوبے میں مجموعی طور پر امن عامہ،امن وسکون اور قانون کی بالادستی کو محفوظ بنانے جیسے چیلنجوں کا احاطہ کیا گیا ہے محکمہ داخلہ پختونخوا کے مطابق قانون نافذ کرنے والے ادارے جدیدیت کی راہ پر گامزن ہیں اور دہشت گردی کا راستہ روکنے کے لئے مختلف محاذوں پر کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں۔

ان اقدامات کی بدولت 2014 کی نسبت 2016 میں دہشت گردی کے واقعات میں 67 فیصد کمی ہوئی محکمہ جیل خانہ جات کی جانب سے ظاہر کئے گئے اعداد و شمار کی مطابق صوبہ خیبر پختونخوا کے مختلف جیلوں میں موجودہ گنجائش (7547 ) سے 47 فیصد زیادہ یعنی 11061 قیدیوں کی میزبانی کررہا ہے۔جس کی بنیادی وجہ70 فیصد مختلف جیلوں میں مجموعی طور پرقیدیوں کا ٹرائل چل رہا ہے۔2017 کے اواخر تک نئے سینٹرل جیل میں 4 ہزار قیدیوں کے فرق کے تناسب کو کم کر تے ہوئے 2100 قیدیوں کے لئے گنجائش پیدا کی جا رہی ہے جبکہ صوبے کے اضلاع صوابی، سوات، ملاکنڈ، ہنگو،شانگلہ اور ڈی آئی خان میں نئی جیلوں کی تعمیر سے زیادہ قیدیوں کی گنجائش ملنے میں خاطر خواہ مدد ملے گی پراسیکیوشن ڈائریکٹوریٹ پبلک پراسیکیوٹر کے ذریعے صوبے کے تمام فوجداری عدالتوں میں انصاف مہیا کیا جا رہا ہے۔

جبکہ سال-15 2014 کے 309078 جبکہ سال 2016 کے 113736 کیسوں کو کامیابی سے نمٹایا جا چکا ہے۔اسی طرح نظامت بحالی و آزمائش (ڈائریکٹویٹ آف پروبیشن اینڈ ریکلمیشن)قیام سے اب تک عدالتوں میں مقدمات کی پیروی کر رہا ہے جبکہ معاشرے کے نابالغ مجرموں کی اصلاح میں معاونت سمیت متبادل ماحول کی فراہمی میں مددگار ثابت ہو رہا ہے۔اب تک 1906 ایسے مجرموں کو پیرول پر رہائی دلوائی جا چکی ہے۔