بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا میں بجلی ترسیل کا نیا نظام متعارف

خیبر پختونخوا میں بجلی ترسیل کا نیا نظام متعارف


پشاور۔خیبر پختونخوامیں مکمل ہونے والے پن بجلی گھروں کی بجلی کی ترسیل کے حوالے سے طریقہ کار تبدیل کرتے ہوئے پہلے متعلقہ علاقوں کو ان منصوبوں سے بجلی فراہم کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے جس کے بعداضافی بجلی نیشنل گرڈ میں شامل کی جائے گی اس سلسلے میں نئی پالیسی ترتیب دے دی گئی جس کے بعدرواں سال اس پر عملدر آمد شروع ہوجائے گا وزیر اعظم کے مشیر انجنیئر امیر مقام نے متعلقہ حکا م کوا س سلسلے میں تمام تیاریاں فوری طورپر مکمل کرنے کی ہدایت کردی ذرئع کے مطابق ملک بھر میں پہلی مرتبہ خیبر پختونخوامیں بجلی کے کم وولٹیج ،لائن لاسز اور ترسیل کے حوالے سے دیکر مسائل مستقل بنیادوں پر حل کرنے کے لیے بجلی کی ترسیل و تقسیم کا نیا نظام متعارف کرایاجارہاہے۔

جسکے تحت پہلے مرحلے میں ملاکنڈڈویژن میں پن بجلی کے مکمل ہونے والے منصوبوں سے متعلقہ اضلاع کو بجلی فراہم کی جائے گی اس وقت خان خوڑ ،الائی خوڑ ،دبیر خوڑ سمیت کئی پن بجلی منصوبے مکمل ہونے والے ہیں جسکے بعدان کی بجلی شنانگلہ اور بعد ازاں ایک متبادل لائن کے ذریعے سوات کو فراہم کی جائے گی اسی طرح رواں برس چترال میں گولن گول ہائیڈرو پاور پراجیکٹ سے بھی بجلی کی فراہمی شروع ہوجائے گی جس کے بعدپہلے چترال کی ضروریات پوری کی جائیں گی بعدازاں تمام اضافی بجلی کے چکدرہ میں 220کے وی اے کا گرڈ سٹیشن بنایاجارہاہے جو متعلقہ اضلا ع کے لیے ایک متبادل بجلی لائن کاکام دے گا اس نئے سسٹم سے صوبہ میں بجلی کا بحران ختم ہونے میں مد دمل سکے گی اس حوالہ سے رابطہ پر وزیر اعطم کے مشیر امیر مقام نے بتایا کہ اس نئی پالیسی کااطلاق سب سے پہلے خیبر پختو نخوا اور ملاکنڈ ڈویژن میں کیا جارہاہے جس سے نہ صرف لائن لاسز پرقابو پانے میں مددمل سکے گی بلکہ کم وولٹیج کامسئلہ بھی حل ہوسکے گا انہوں نے کہاکہ وفاقی حکومت پسماندہ علاقوں میں توانائی کے بحران کو ترجیحی بنیادوں پرحل کر نا چاہتی ہے اور اس نئی پالیسی سے بجلی کے بحران کے خاتمہ میں مدد مل سکے گی