بریکنگ نیوز
Home / کھیل / مصباح الحق سب سے بہتر کپتان قرار

مصباح الحق سب سے بہتر کپتان قرار

اسلام آباد۔پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی)کے چیئرمین شہریار خان نے مصباح الحق کو عمران خان سے بہتر کپتان قراردیدیا اورپاکستانی قوم کو پاکستان سپر لیگ( پی ایس ایل )کے تیسرے ایڈیشن کا فائنل کراچی میں کرانے کی نوید بھی سنا دی۔تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے بین الصوبائی رابطہ کا اجلاس چیئرمین کمیٹی عبدالقہار خان کی زیر صدارت منعقد ہوا ۔

چیئرمین کرکٹ بورڈ شہریار خان نے مستقبل کے پروگراموں پر کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کراچی میں مئی میں سرینہ ہوٹل کی برانچ کھل جائے گی اور غیر ملکی ٹیمیں کراچی کے ہوٹل میں ٹھہریں گی ۔ انہوں نے بتایا کہ مئی میں ایک بائیو مکینکل لیبارٹری کھول رہے ہیں اور اب ٹیسٹنگ کیلے کھلاڑیوں کو بیرون ملک نہیں جانا پڑے گا جبکہ آئی سی سی کا وفد مئی میں لیبارٹری کو دیکھنے کیلئے پاکستان کا دورہ کرے گا ۔بگ تھری کے تحت بھارت کی وعدہ خلافیوں سے ہونیوالے مالی نقصان پر بی سی سی آئی کو لیگل نوٹس بھیج دیا ہے جس کا جواب وہ ایک ہفتے میں دینے کا پابند ہے ۔کمیٹی کے ممبر ڈاکٹر رامیش کمار کی جانب سے دانش کنیریا پر عائد پابندی کا جواب دیتے ہوئے شہریار خان نے کہا کہ دانش کنیریا پر انگلینڈکرکٹ بورڈ نے پابندی لگائی اورآئی سی سی کے دس ممالک میں سے کوئی پابندی عائد کر ے تو سب کو پیروی کرنا ہوتی ہے۔

دانش کنیریا کے حوالے سے ہمارے ہاتھ پاں بندھے ہوئے ہیں۔ممبر کمیٹی ماجد علی نے سوال اٹھایا کہ پاکستان میں جاوید میاں داد جیسے کوچ موجود ہیں جن کوکرکٹ کی اکیڈمی کہا جاتا ہے تو غیر ملکی کوچز کو بھاری معاوضے پر کیوں بلایا جاتا ہے ؟ جس پر چیئرمین پی سی بی نے جواب دیا کہ جاوید میانداد کو تین سے چار مرتبہ آزمایا اور ان کی تعلیم کم ہو نے کے باعث وہ ڈیلیور نہیں کرسکے ہم پاکستان میں کوچز ہیں ان کو اوپر لائیں گے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کی کرکیٹ کی ٹیسٹ ٹیم نمبرون ٹیم بن چکی ہے اورمصباح الحق عمران خان سے بھی بہتر کپتان ثابت ہوئے مگردکھ کی بات ہے وہ ریٹائرڈ ہو رہے ہیں اور ان کا اب ریٹائرمنٹ کا وقت قریب آگیا ہے ۔

انہوں نے کمیٹی کو بتایا کہ رواں مہینے کراچی میں سرینا ہوٹل کی تعمیر مکمل ہو جائے گی جس کے بعد ملکی و غیر ملکی کھلاڑی وہاں قیام کرسکیں گے، پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے ذریعے ہم دنیا کو پیغام دیا کہ پاکستان میں امن قائم ہو چکا ہے اور یہاں میچز کھیلے جا سکتے ہیں۔چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ وہ جلد کراچی جاکر وزیراعلی سندھ سے ملاقات کریں اس کے علاوہ کور کمانڈر سے بھی ملاقات کر کے سکیورٹی کی گارنٹی لی جائے گی اورآئی سی سی سے جلد کراچی کی سکیورٹی کلیئرنس کروائی جائیگی۔سکیورٹی کلیئرنس کے بعد پی ایس ایل کے تیسرے ایڈیشن کا فائنل کراچی میں منعقد کرایا جائے گا۔

انہوں نے کمیٹی کو بتایا کہ مکی آرتھر نے ہماری ٹیم کو آگریسو بنا دیا ہے،انضمام الحق بھی ان کے نقش قدم پر چل رہے ہیں،ہمیں نوجوان نسل کو آگے لانا ہے،حسن علی اور بابر اعظم اور دیگر نوجوانوں کو ٹیم میں شامل کیا گیا،ورلڈ الیون ستمبر میں تیار ہو رہی ہے جس میں نوجوان ممبر ہوں گے،باہر کے کرکٹر یہاں آکر کھلیں گے،نوجوان کرکٹر کی پروموشن انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔انہوں نے بتایا کہ انڈر 13چیمپئن شپ کا بھی آغاز کر دیا گیا ہے،ہم گراس روٹ لیول پر نوجوانوں کو تیار کر رہے ہیں،سکول چیمپئن شپ کی سربراہی عبد الحمید کاردار کر رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ صرف دس سال پرانی وویمن کرکٹ ٹیم ہے،ہماری وویمن ٹیم ایشیا کپ بھی جیتی ہے۔

کراچی میں آغا خان سے اپیل کی ہے کہ اپنا ہوٹل کھولیں تاکہ وہاں باہر سے کھلاڑی آکر کھیل بھی سکتے ہیں اور ٹھہر بھی سکتے ہیں۔اس پر کمیٹی ممبر رانا محمد افضل نے کہا کہ کرکٹ کے حوالے سے کراچی کا مسئلہ حل کیا جائے ،ورنہ تاثر دیا جائے گا کہ پنجاب کراچی کا حق کھا رہا ہے۔