بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / سپریم کورٹ پانامہ لیکس کے معاملے پر ازخود نوٹس لے ،عمران خان

سپریم کورٹ پانامہ لیکس کے معاملے پر ازخود نوٹس لے ،عمران خان


اسلام آباد۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پانامہ لیکس کے معاملے پر سپریم کورٹ ازخود نوٹس لے،کرپٹ عناصر کو پکڑنا اداروں کی ذمہ داری ہے مگر وہ ایسے لوگوں کو تحفظ دینے میں مصروف ہیں،عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکے کیونکہ ظلم و تشدد کے ذریعے لوگوں کی وفاداریاں نہیں خریدی جاسکتیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئیٹر پر اپنے ایک بیان میں کیا۔عمران خان نے کہا کہ ملک میں صرف کمزور اور غریبوں کو جیل میں ڈالا جاتا ہے اور بڑے مگرمچھ آزاد پھر رہے ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ کرپٹ عناصر کو پکڑنا اداروں کی ذمہ داری ہے لیکن متعلقہ ادارے ان لوگوں کو تحفظ دے رہے ہیں انہوں نے کہاکہ پانامہ لیکس کے معاملے پر سپریم کورٹ کو ازخود نوٹس لینا چاہیے دریں اثناء عمران خان نے اپنے ایک بیان میں مقبوضہ کشمیرمیں جاری بھارتی بربریت کے حوا لے سے کہا کہ اقوام متحدہ کی رکن ریاستیں کشمیر پر کئے گئے وعدوں کو پورا اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اپنی قراردادوں پرعمل درآمد کرائے۔

عمران خان نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں رکوائے کیونکہ ظلم و تشدد کے ذریعے لوگوں کی وفاداریاں نہیں خریدی جا سکتیں اورنہ ہی عسکری قبضے سے لوگوں کو سرنگوں نہیں کیا جا سکتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں پر چھرا بندوقوں کا استعمال بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے اور ظلم و تشدد کے ذریعے لوگوں کی وفاداریاں نہیں خریدی جا سکتیں ۔

جب کہ مشرقی تیمورکے حوالے سے 1999 میں ایسی ہی قراردادوں پر عملدرآمد کرایاگیا تھا۔عمران خان نے کہا کہ پاکستانی حکومتوں نے مسئلہ کشمیر کو پس پشت ڈال دیا، وزیراعظم نوازشریف نے نئی دہلی میں حریت قیادت سے ملنے سے انکار کر دیا تھا اور وزیراعظم شریف خاندان کا کاروبار بڑھانے کیلئے میٹنگز میں مصروف تھے۔