بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / ٹرمپ نے ڈائریکٹر ایف بی آئی کوبرطرف کردیا

ٹرمپ نے ڈائریکٹر ایف بی آئی کوبرطرف کردیا

واشنگٹن۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وفاقی تحقیقاتی ادارے یعنی فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن (ایف بی آئی)کے ڈائریکٹر جیمز کومی کو اچانک اپنے عہدے سے برطرف کر دیا۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق ایف بی آئی ڈائریکٹر کو لکھے جانے والے ایک خط میں ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ادارے پر قوم کا اعتماد بحال کرنے کے لیے ڈائریکٹر کی برطرفی ضروری تھی۔تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ امریکی صدر کے اس اقدام سے صدارتی الیکشن میں روسی مداخلت پر ہونے والی تحقیقات پر گہرا اثر پڑے گا۔یاد رہے کہ جیمز کومی گذشتہ چند ماہ کے دوران ہیلری کلنٹن کی ای میلز کی تحقیقات پر اپنے تبصرے اور کانگریس کو لکھے گئے اپنے خطوط کی وجہ سے تحقیقات کی زد میں تھے۔

تاہم ڈونلڈ ٹرمپ نے ہیلری کلنٹن کی ای میل تحقیقات کے سلسلے میں جیمز کومی کے کردار کا ذکر نہیں کیا لیکن برطرفی کے موقع پر وائٹ ہاس نے ڈپٹی اٹارنی جنرل روڈ روسینٹائن کا تحریر کردہ میمو جاری کیا جس میں کانگریس کو ہیلری کلنٹن کی ای میلز کے بارے میں غلط معلومات فراہم کرنے پر شدید تنقید کی گئی۔واضح رہے کہ یہ امریکی تاریخ میں دوسری مرتبہ ہوا ہے، جب کسی امریکی صدر نے ایف بی آئی کے ڈائریکٹر کو برطرف کیا ہے۔اس سے قبل امریکی صدر بل کلنٹن نے 1993 میں ولیم سیشنز کو اخلاقی کوتاہیوں کے الزام میں ڈائریکٹر ایف بی آئی کے عہدے سے برطرف کردیا تھا۔ایف بی آئی کے ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اے پی کو بتایا کہ جیمز کومی لاس اینجلس میں ادارے کے ایک دفتر میں افسران سے خطاب کر رہے تھے کہ عین اسی وقت ٹیلی ویژن پر ان کی برطرفی کی خبر نشر ہوئی جس کے بعد جیمز کومی مسکرائے اور اپنی تقریر ختم کردی۔

تاہم ڈیموکریٹس نے صدر ٹرمپ کے اس اقدام کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وائٹ ہاس، ایف بی آئی اور کانگریس پینل کی جانب سے کی جانے والی تحقیقات میں مشکلات پیدا کر رہا ہے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ جیمز کومی کو فوری طور پر طلب کرکے کانگریس میں پیش کیا جائے اور ان سے ٹرمپ-روس تعلقات پر ہونے والی تحقیقات میں پیش رفت کے بارے میں آگاہی حاصل کی جائے۔جیمز کومی کے بعد نئے ایف بی آئی ڈائریکٹر کے انتخاب کے لیے تلاش شروع کر دی گئی تاہم ابھی ڈپٹی ڈائریکٹر ایف بی آئی اینڈریو مک کیبی قائم مقام ڈائریکٹر ایف بی آئی کی حیثیت سے ذمہ داری نبھائیں گے۔