بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / بنی گالہ کیس میں عمران خان سے جواب طلب

بنی گالہ کیس میں عمران خان سے جواب طلب

اسلام آباد۔ سپریم کورٹ نے سی ڈی اے سے راول ڈیم کے اطراف 20سال میں الاٹ کی گئی زمین کا ریکارڈ طلب کرلیا جبکہ سی ڈی اے رپورٹ پر عمران خان سے جواب طلب کرلیا‘ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ دیکھنا ہوگا بنی گالہ میں پلاٹ کیسے الاٹ ہوئے‘ یہ ریاست پاکستان کی زمین تھی جو الاٹ کی گئی‘ کیا پلاٹ کی الاٹمنٹ نیلامی کے ذریعے کی گئی؟ دیکھنا ہے کیا پلاٹس کی الاٹمنٹ قانون کے مطابق ہوئی؟ تعمیرات کا معاملہ اس کے بعد آئے گا۔ بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ یہ کوئی پیچدہ نہیں سیدھا معاملہ ہے۔

ہمیں قانون اور قوائد کو دیکھنا ہوگا۔ بابر اعوان نے کہا کہ سی ڈی اے نے عمران خان کی رہائش گاہ کی نشاندہی کی۔ جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہا کہ ہمیں راول ڈیم کے پانی کو آلودہ ہونے سے بچانا ہے۔ ہمیں بنی گالہ گارڈن کو تجاوزات سے بچانا ہے۔ غیر قانونی تعمیرات کا معاملہ محکمہ خود دیکھے۔ بابر اعوان نے کہا کہ درختوں کی کٹائی روکنے کے لئے دفعہ 144 لگائی گئی ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ سی ڈی اے اور انتظامیہ کے اقدامات مثبت نوعیت کے ہیں۔ بابر اعوان نے کہا کہ یہ اقدامات صرف کاغذوں کی حد تک نہیں۔ سی ڈی اے کے مطابق غیر قانونی تعمیرات کا سروے کیا گیا سی ڈی اے رپورٹ میں جنوبی ایریا کو فوکس کیا گیا۔ سینکڑوں عمارتیں بنی گالہ روڈ پر قائم ہوچکی ہیں۔ مشرقی ‘ مغربی اور شمالی علاقوں کو نظر انداز کیا گیا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ دیکھنا ہوگا بنی گالہ میں پلاٹ کیسے الاٹ ہوئے۔ یہ ریاست پاکستان کی زمین تھی جو الاٹ کی گئی۔

کیا پلاٹ کی الاٹمنٹ نیلامی کے ذریعے کی گئی۔ آپ تسلیم نہیں کرتے 122 عمارتوں کی تعمیر غیر قانونی ہے۔ آپ کہتے ہیں بنی گالہ میں زیادہ تعمیرات غیر قانونی ہیں۔ دیکھنا ہے کیا پلاٹس کی الاٹمنٹ قانون کے مطابق ہوئی؟ تعمیرات کا معاملہ اس کے بعد آئے گا۔ عدالت نے سی ڈی اے سے راول ڈیم کے اطراف بیس سال میں الاٹ کی گئی زمین کا ریکارڈ طلب کرلیا جبکہ سی ڈی اے رپورٹ پر عمران خان سے جواب طلب کرلیا۔ سی ڈی اے کی حدود پر معاونت کے لئے اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری رکدیا گیا۔ عدالت نے سی ڈی اے سے غیر قانونی تعمیرات کو ریگولیٹ کرنے کا میکنزم بھی طلب کرلیا عدالت نے کیس کی سماعت تین ہفتوں تک کے لئے ملتوی کردی۔