بریکنگ نیوز
Home / سائنس و ٹیکنالوجی / سائبر حملوں میں امریکہ ملوث

سائبر حملوں میں امریکہ ملوث

واشنگٹن۔امریکہ کی نیشنل سیکورٹی ایجنسی کے سابق کنٹرکٹر ایڈورڈ اسنوڈن نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں ہونے والے سائبر حملوں میں امریکہ ملوث ہوتا ہے۔ایڈورڈ اسنوڈن نے سوشل میڈیا پر کہا ہے کہ دنیا کے 74 ملکوں میں ہونے والے سائبر حملوں میں امریکہ کی نیشنل سیکورٹی ایجنسی ملوث رہی ہے.روس سمیت مختلف ممالک کے کمپیوٹر سسٹم کو ایک سائبر حملے کا نشانہ بنایا گیا ہے جس کے نتیجے میں کمپیوٹر میں وائرس پھیل جاتا ہے جو موجودہ اطلاعات تک رسائی کو ناممکن بناتے ہوئے رقم ادا کرنے کا مطالبہ کرتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق جن ممالک کو سائبر حملے کا نشانہ بنایا گیا ہے ان میں برطانیہ، روس، اسپین، چین، اٹلی اور تائیوان بھی شامل ہیں۔ سائبر حملے کے باعث برطانیہ کے کئی اسپتالوں کے کمپیوٹرسسٹم ہنگ ہو گئے ہیں۔روس کی وزارت داخلہ نے بھی اس وزارت خانے کے کمپیوٹر ہینگ ہونے کی خبر دی ہے۔روسی حکام کا کہنا ہے کہ البتہ ہیکر، کوئی اطلاعات حاصل نہیں کر سکے ہیں۔اسپین کے حکام نے بھی اعلان کیا ہے کہ اس ملک کی کئی کمپنیاں سائبر حملوں کا نشانہ بنی ہیں۔ماسکو کی وزارت داخلہ نے بتایا ہے کہ ان کے ایک ہزار سے زیادہ کمپیوٹر اس حملے کی زد میں آئے ہیں۔

برطانیہ بھر میں اسپتالوں کے کمپیوٹر وں کا نظام متاثر ہوا اور انہیں مریضوں کی ڈاکٹروں کے ساتھ پہلے سے طے شدہ ملاقاتیں منسوخ کرنا پڑیں۔برطانیہ کی نیشنل ہیلتھ سروس نے کہا ہے کہ ان کے اسپتالوں کے کمپیوٹر ایک خاص قسم کے وائرس رین سم ویئر کا نشانہ بنے ہیں ۔ یہ وائرس اس وقت تک کمپیوٹر کے ڈیٹا تک رسائی کی اجازت نہیں دیتا جب تک ہیکرز کو ان کا طلب کردہ معاوضہ ادا نہ کیا جائے۔ برطانیہ میں کمپیوٹر بحال کرنے کے لیے ہیکرز 300سے 600ڈالر تک طلب کررہے ہیں۔اس طرح کے واقعات امریکہ، چین، روس، پرتگال اور اٹلی سمیت کئی دوسرے ملکوں سے بھی رپورٹ کیے جا رہے ہیں۔