بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / دہشتگردی مقدمات میں قید ملزمان کا نفسیاتی علاج کرانیکا فیصلہ

دہشتگردی مقدمات میں قید ملزمان کا نفسیاتی علاج کرانیکا فیصلہ

پشاور۔یورپی یونین کمیشن کے تعاون سے خیبر پختونخوا حکومت نے دہشت گردی کے مقدمات میں قید ملزمان کو انتہائی پسندثابت کرنے کے لئے ان کا نفسیاتی علاج کرانے کا فیصلہ کیا ہے جس کے بعد یورپی یونین کمیشن سے مقامی سائیکالوجسٹ کو خصوصی تربیت دینے کی درخواست کی ہے۔ صو بائی محکمہ داخلہ کے ذرائع کے مطابق اس بات کی درخواست یورپین کمیشن کے حکام کے ساتھ اعلیٰ سطحی اجلاس میں کیا ہے ۔

ٗ اعلیٰ سطحی اجلاس میں صوبائی سیکرٹری داخلہ کے علاوہ یورپین کمیشن کے حکام اور دیگر متعلقہ حکام نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں یورپین کمیشن کی جانب سے صوبے میں مختلف شعبوں میں کام کرنے کی خواہش کے اظہار کے بعد صوبائی حکومت نے ان سے درخواست کی کہ ری کمیشن اینڈ پروبیشن ڈائریکٹریٹ کو مضبوط بنانے کے علاوہ دہشت گردی سے متاثرہ خاندانوں کو قرضوں اور تعلیم کی صورت میں معاونت فراہم کی جائے ۔

جس پر یورپین کمیشن نے اس تجویز کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی سے متاثرہ خاندانوں کو قرضوں کی فراہمی منصوبے میں شامل نہیں تاہم اجلاس میں سیکرٹری داخلہ نے اس بات پر بھی زور دیا کہ مقامی سائیکالوجسٹ کو تربیت دے کر انہیں اس قابل بنایا جائے کہ وہ دہشت گردی کے مقدمات میں قید ملزمان کو انتہائی پسندی ثابت کرنے میں کردارادا کریں اجلاس میں یورپین یونین کمیشن نے صوبائی حکومت کو یقین دلایا کہ آنے والے پراجیکٹ میں ان کی طرف سے دی گئی تمام تجاویز شامل کی جائیں گی۔۔