بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / حسین نواز کی تیسری پیشی ٗ6 گھنٹے تک پوچھ گچھ

حسین نواز کی تیسری پیشی ٗ6 گھنٹے تک پوچھ گچھ

آباد۔وزیر اعظم محمد نواز شریف کے بڑے صاحبزادے حسین نواز نے کہاہے کہ تمام معاملات قانون کے مطابق چلتے ہیں تو ٹھیک ورنہ معاملہ سپریم کورٹ میں چلے گا اور عوام کے سامنے آئیگا ٗ بارہ اکتوبر 1999کو قید تنہائی میں پوچھ گچھ ہوتی تھی ٗ کسی وکیل سے نہیں ملنے دیا جاتا تھا ٗ آج ایسی بات نہیں ہے تاہم معاملات وہی ہیں ٗ انہی چیزوں کی دوبارہ چھان بین ہورہی ہے ۔

وزیر اعظم ٗ میرے یا میرے کسی بہن بھائی کے خلاف کوئی بے ضابطگی ٗ کوئی جرم اور کوئی برائی ہے ہی نہیں تو سامنے کیا آئیگا ؟دو گھنٹے انتظار کرایا گیا ہے ٗ جے آئی ٹی کے ساتھ طویل سیشن چلا ہے ٗمیرے جوابات سے مطمئن ہوئے یا نہیں ان سے پوچھا جائے ۔ جمعرات کو پانا ما لیکس کی تحقیقات کیلئے قائم جے آئی ٹی کا اجلاس واجد ضیاء کی سربراہی میں ہوا ٗوزیراعظم کے بڑے صاحبزادے حسین نواز پانچ روز میں تیسری بار جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوئے اور تقریباً چھ گھنٹے تک سوالوں کے جواب دیئے ۔جے آئی ٹی میں پیشی کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے حسین نواز شریف نے کہاکہ جے آئی ٹی کے ساتھ طویل سیشن اٹینڈ کر کے آیا ہوں ٗصبح دس بجے پہنچ گیا تھا اب سوا چار بجے واپس آیا ہوں انہوں نے کہاکہ جے آئی ٹی نے مجھے دوبارہ بلایا ہے سمن ابھی نہیں ملا وہ بھی مل جائیگا انہوں نے بتایا کہ مجھے دو گھنٹے انتظارکرایاگیا ہے

۔ 12اکتوبر 1999ء کے مارشل لا کے حوالے سے سوال پر وزیر اعظم کے صاحبزادے نے کہاکہ اس وقت قید تنہائی میں پوچھ گچھ ہوتی تھی ٗ کسی وکیل سے نہیں ملنے دیا جاتا تھا ٗ خاندان ٗبچوں اور گھر والوں سے نہیں ملنا دیا جاتا تھا آج ایسی بات نہیں ہے تاہم معاملات آج بھی وہی ہیں ٗ انہی چیزوں کی دوبارہ چھان بین ہورہی ہے انہوں نے کہاکہ حسین شہید سہروری سے لیکر آج تک ہمارے ساتھ ہی سب کچھ ہوتاچلا آیاہے ۔ایک سوال پر حسین نواز نے کہاکہ یہاں کسی کے رویئے پرڈسک کر نے نہیں آیا ہوں ۔ایک اور سوال پر انہوں نے کہاکہ تمام معاملا ت قانون کے مطابق چلتے ہیں تو ٹھیک ہے اگر معاملہ فیئر ہو کر نہیں چلے گا تو سپریم کورٹ میں چلے گا اور عوام کے سامنے آئیگا۔

ایک اور سوال پر انہوں نے کہاکہ جس جس کو بلایا جائیگا وہ جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوگا ایک اور سوال پر حسین نواز شریف نے کہاکہ جو سوالات پوچھے گئے ہیں ان کے جوابات دیئے ہیں وہ مطمئن ہوئے یا نہیں ان سے پوچھا جائے۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم ٗ میرے یا میرے کسی بہن بھائی کے خلاف کوئی بے ضابطگی ٗ کوئی جرم ٗ کوئی برائی ہے ہی نہیں ٗاس میں کوئی ثبوت نہیں ملے گا یہ بات سب کو کلیر ہونا چاہیے ایسی کوئی چیز ہے ہی نہیں توسامنے کیا آئیگی ۔ایک اور سوال پر انہوں نے کہاکہ وکیل کو ساتھ بٹھانے کی اجازت نہیں دی گئی ۔