بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا کے عوام گراں فرو شو ں کے رحم وکرم پر

خیبر پختونخوا کے عوام گراں فرو شو ں کے رحم وکرم پر

پشاور۔ صو بے بھر میں ضلعی انتظامیہ خود ساختہ مہنگائی کو کنٹرول کر نے میں ناکام ہو گئی ہے ٗ اشیاء خورد و نوش کی قیمتو ں میں آئے روز کے اضافے نے غریب روزہ داروں کے لئے افطار کا اہتمام مشکل کر دیا ہے جبکہ یہ انکشاف بھی ہوا ہے کہ ضلعی انتظامیہ نمائشی چھاپے مار کر صو بائی محکمہ داخلہ کو’’ سب اچھا ‘‘کی رپورٹ بھیج رہی ہے۔

ہفتہ وار بھتہ نہ دینے والے دکانداروں کو بھاری جرمانے کئے جاتے ہیں تاہم 20 ہزا رروپے بطور جرمانہ وصول کر کے سرکاری خزانے میں دو ہزار روپے ظاہر کئے جاتے ہیں یہ بھی بتا یا گیا ہے کہ جعلی چائے اور مصالحہ جات تیار کر نے والی فیکٹریوں سے بھی ماہانہ بھتہ وصولی کی جاتی ہے ٗ اورعوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے ایک مرتبہ چھاپہ مار کران فیکٹری مالکان کے ساتھ ماہانہ بھتہ وصولی کا ریٹ مقررکیا جاتاہے ٗ صوبائی حکو مت نے تمام انتظامی سیکر ٹر یوں کو ہدایت کی تھی کہ وہ اضلاع کے دورے کرکے مسائل اور ان کے حل کے لئے ضلعی انتظامیہ کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کی رپورٹ پیش کریں لیکن گزشتہ ایک سال سے اب یہ سلسلہ بھی بند ہو گیا ہے ٗانتظامیہ سیکر ٹر یو ں نے دورے کر نا بند کر دےئے ہیں۔

پشاور سمیت دیگر اضلاع سے بھی یہ شکایات عام ہیں کہ ضلعی انتظامیہ کے افسران بازاروں میں چیکنگ کے دوران گاڑیوں میں بیٹھے رہتے ہیں اور ان کے ٹاؤٹ دکانوں کی چیکنگ کر تے ہیں جن کے پاس کوئی اختیار نہیں ۔بعد میں یہی افراد دکانداروں کے ساتھ مک مکا کر تے ہیں ۔صو بے بھر کے عوام نے اس صورت حال پر احتجاج کیا ہے کہ مختلف سماجی تنظیموں اور سر کاری ملازمین کی ایسو سی ایشنز نے کہا ہے کہ جب سے مجسٹریسی نظام ختم کیا گیا ہے مہنگائی کو کنٹرول کر نے کا کوئی مؤ ثر نظام موجود نہیں اوپر سے نا تجربہ کار اور نئے پی ایم ایس افسروں کو ضلعی انتظامیہ میں تعینات کر کے رہی سہی کسر بھی پور ی کر دی گئی ہے ۔