بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / آئندہ الیکشن میں فیصلہ کارکردگی کی بنیاد پر ہو گا ٗ امیر مقام

آئندہ الیکشن میں فیصلہ کارکردگی کی بنیاد پر ہو گا ٗ امیر مقام


پشاور۔وزیراعظم کے مشیروپاکستان مسلم لیگ(ن)خیبرپختونخواکے صوبائی صدرانجینئرامیرمقام نے کہاکہ وزیراعظم کی بیٹی پراپنے باپ کیساتھ رہنے پراعتراض کرنیوالے عمران خان نے کس منہ سے خیبرپختونخواکے وسائل پرکے پی ہاؤس نتھیاگلی کواپنامستقل مسکن بنالیا ہے،عوامی وسائل پرکبھی میٹنگ اور کرکٹ توکبھی سورج چڑھے افطاری سے محظوظ ہوتے رہتے ہیں، سرکاری ریسٹ ہاؤسزعوام کیلئے کھولنے کے دعویداروں نے اپنے قول وفعل کی دھجیاں اڑادی ہیں اورسرکاری ریسٹ ہاوسزعوام کیلئے مقفل کردیئے ہیں ٹیکس فری بجٹ پیش کرنے والوں نے عوام پرٹیکس کی تاریخی بم گرادیئے ہیں،ٹیکس میں درزیوں،پکوڑے بھیجنے والوں اور میڈیکل سٹورز کوبھی معاف نہیں کیاگیاجس کا بلاواسطہ اثر عوام پرپڑے گا،یہ بجٹ ٹیکس فری نہیں بلکہ ٹیکس ٹری بجٹ تھا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے واپڈا ہاؤس پشاورمیں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پرصوبائی اسمبلی میں پاکستان مسلم لیگ(ن) پارلیمانی لیڈراور نگزیب نلوٹااورصوبائی سیکرٹری اطلاعات ناصرموسیٰ زئی بھی موجودتھے۔وزیراعظم کے مشیرانجینئرامیرمقام نے کہاکہ کچکول توڑنے والوں کے نام نہاددعویدار 126ارب روپے کے صوبائی ترقیاتی پروگرام میں82ارب روپے بیرونی امداداورقرضے لیں گے جبکہ پروگرام کے تحت مختلف منصوبوں پرعملدرآمدکیلئے10ارب روپے مقامی قرضہ لیں گے۔انہوں نے کہاکہ کاکردگی کی بدولت آئندہ انتخابات میں بھی بھاری اکثریت سے کامیاب ہوں گے،عوام کی عدالت2018میں کاکردگی کی بنیادپرفیصلہ دے گی۔

انجینئرامیرمقام نے کہاکہ وزیراعلیٰ صاحب کہتے ہیں کہ واپڈاہمارے حوالے کردیاجائے مگراس سے قبل وہ عوام کو خیبرپختونخوا میں بھی اداروں کی حالت زارسے آگاہ کریں،ڈی جی احتساب کمیشن کااستعفیٰ،خیبربینک لیکس،شکیل درانی کااستعفیٰ، پیڈو لیکس آج بھی تحریک انصاف کیلئے سوالیہ نشان ہیں۔انہوں نے کہاکہ2013میں پوراصوبہ تووزیراعلیٰ کے حوالے کیاگیاتھااور18ویں ترمیم کے تحت وہ بااختیاربھی تھے،مگرصوبائی حکومت نے کارکردگی دکھانے اوراصلاحات لانے کی بجائے اپناوقت محض دھرنوں اورالزام تراشیوں میں ضائع کردیا۔