بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبرپختونخوا کے عوام کیلئے صحت انصاف کارڈ کی سہولت

خیبرپختونخوا کے عوام کیلئے صحت انصاف کارڈ کی سہولت

پشاور۔خیبر پختونخوا حکومت نے کہا ہے کہ صوبے کی 2کروڑ 80لاکھ کے قریب آبادی میں ایک کروڑ 92لاکھ افراد کو صحت انصاف کارڈ کے ذریعے علاج معالجے کی مفت سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں ٗسکولوں میں مسنگ سہولیات کی فراہمی پر چار سال میں 21ارپ روپے خرچ کئے گئے ٗصحت کا بجٹ چارسال میں 18سے 66ارب روپے تک پہنچا دیا گیا ہے منگل کے روزصوبائی اسمبلی کے بجٹ اجلاس سے صوبائی وزیر اطلاعات شاہ فرمان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر کے ہسپتالوں میں ایم ٹی آئی نظام رائج ہے جس کے خاطر خواہ نتائج برآمد ہو رہے ہیں ۔

پرویز مشرف نے اپنے دور میں ایم ٹی آئی نظام لانے کی کوشش کی لیکن وہ ناکام رہے یہ کریڈیٹ تحریک انصاف کی حکومت کو جاتا ہے جس نے ہسپتالوں میں ایم ٹی آئی نظام رائج کیا انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت 69فیصد خاندانوں کو صحت سہولیات فراہم کر رہی ہے صوبے کے تقریباً 2کروڑ 80لاکھ کی آبادی میں ایک کروڑ 92لاکھ افراد کو علاج معالجے کی مفت سہولیات فراہم کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جلسوں اور اسمبلی کے اندر تقاریر کا فرق رکھیں اسمبلی میں اعداد وشمار اور حقائق پر بات کی جانی چاہئے صوبائی وزیر ابتدائی و ثانوی تعلیم محمد عاطف نے کہا کہ موجودہ حکومت نے چار سال میں تعلیم کے بجٹ کو 64سے 137ارب تک پہنچا دیا ہے۔

صوبے میں 450نئے سکول تعمیر کئے گئے مسنگ سہولیات کی فراہمی کے منصوبے کے تحت سکولوں میں 10ہزار اضافی کمرے تعمیر کئے ٗ 14ہزار 400سکولوں کی باؤنڈری والز تعمیر کی گئیں 13ہزار 600سکولوں کو پینے کے صاف پانی کی سہولیات فراہم کی گئیں چار سال میں 43ہزار اساتذہ کی تربیت مکمل کی گئی اساتذہ کی تربیت کیلئے 50کروڑ روپے مختص کئے انہوں نے کہا کہ پرائمری سکولوں میں پلے گراؤنڈز کا تصور نہیں تھا موجودہ حکومت نے ساڑھے 7ہزار پرائمری سکولوں میں پلے گراؤنڈ قائم کئے پلے گراؤنڈ 10ہزار پرائمری سکولوں میں قائم کئے جائینگے۔

14لاکھ بچوں کو فرنیچر کی سہولیات فراہم کی گئیں انہوں نے کہا کہ پرائیویٹ سکولوں نے ایک لاکھ 51ہزار بچے سرکاری سکولوں میں داخل ہوئے اگر یہ اعداد و شمار غلط ثابت ہوئے تو متعلقہ افسروں کے خلاف کاروائی کرینگے محمد عاطف نے کہا کہ مجموعی طور پر 2150میگا واٹ کے منصوبے شروع کر دیئے ہیں جو آئندہ چند سال میں مکمل ہونگے سینئر صوبائی وزیر برائے صحت شہرام ترکئی نے کہا کہ لیڈی ریڈنگ ہسپتال کے بورڈ آف گورنر کے چیئرمین ڈاکٹر نوشیروان برکی پر تنقید کی جاتی ہے حالانکہ وہ اپنی خدمات بالکل مفت فراہم کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ صحت کا بجٹ 18ارب سے 66ارب تک پہنچا دیا ہے جو آئندہ مالی سال کے مجموعی بجٹ کا 11فیصد بنتا ہے ۔