بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / مسجد ابراہیمی کے دروبام اذان سے محروم

مسجد ابراہیمی کے دروبام اذان سے محروم

مقبوضہ بیت المقدس۔قابض صہیونی فوج اور پولیس کی جانب سے فلسطین کے مغربی کنارے کے تاریخی شہرالخلیل کی تاریخی جامع مسجد میں فلسطینی شہریوں کی نمازوں کی ادائیگی اور اذان پرپابندیوں کا ناروا اور غیرقانونی سلسلہ بدستور جاری ہے ،مئی کے دوران مسجد ابراہیمی کے دروبام 65 بار اذان سے محروم رہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق فلسطینی محکمہ اوقاف ومذہبی امور کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ مسجد ابراہیمی میں اذان اور نماز پرصہیونی پابندیوں میں اضافہ ہوچکا ہے ۔

مسجد ابراہیمی اور مسجد اقصی پریہودیوں کا ملکیت کا دعوی باطل اور جھوٹ پرمبنی ہے اور صہیونی قوتیں ان دونوں مقدس مقامات کے حوالے سے دنیا کو گمراہ اور تاریخ کومسخ کررہی ہیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ مسجد ابراہیمی میں اذانوں اور نماز پڑھنے پرپابندی مذہبی آزادی پر حملے کے مترادف ہے اور صہیونی یہ غیرقانونی کارروائیاں روز مرہ کی بنیاد پر کررہے ہیں ، اپریل کے دوران صہیونی حکام کی جانب سے مسجد ابراہیمی میں 51 بار اذان دینے پر پابندی لگائی اور دعوی یہ کیا گیا کہ اذان دینے سے یہودیوں کے سکون میں خلل پیدا ہوتا ہے۔