بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وفاق سود کے خاتمے کیلئے اپنا کردار ادا کرے ٗ پرویز خٹک

وفاق سود کے خاتمے کیلئے اپنا کردار ادا کرے ٗ پرویز خٹک

پشاور۔وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہاہے کہ نجی سودکے خاتمہ کااختیار ہمارے پاس تھا اور ہم نے اس کے خلاف قانون سازی کرکے اپنا فرض پورا کردیاہے اب مسلم لیگ ن کی وفاقی حکومت ملک بھرکی بینکوں سے سودی لعنت ختم کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرے سرکاری افسران کو بنگلوں اور سرکاری گاڑیوں کے ہوتے ہوئے تنخواہ میں خاطرخواہ اضافہ نہیں دیاجاسکتا جون از م کے خاتمہ کے لیے حکمت عملی وضع کرلی ہے صوبائی اسمبلی میں اظہا ر خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ وفاقی حکومت اگر سود کاخاتمہ کرتی ہے توصوبائی حکومت بھی پہل کرتے ہوئے اس حوالے سے سود ختم کردے گی۔ صوبائی حکومت نے نجی سودپرپابندی لگائی ہے ۔

سرکاری سود کے حوالے سے صوبائی حکومت کے پاس کوئی اختیار نہیں وفاقی حکومت کو اب اپنا کردار اداکرنا ہوگا ۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ چینی حکومت کے ساتھ مختلف یاداشتوں پر دستخط ہوئے ہیں۔2400ارب کی سرمایہ کاری سے صوبے کی تقدیربدل جائے گی ۔ اقتصادی راہداری کے حوالے سے مین روٹ کے علاوہ اب گلگت اور چترال سے ہوتے ہوئے نیاروٹ بنایاجائے گاجس سے صوبے میں روزگارکے نئے مواقع پیداہونگے تاہم بدقسمتی سے اس سلسلے میں بھی ہم امتیازی رویہ کانشانہ بنے ہوئے ہیں اگر سی پیک کے لیے وفاقی حکومت کو منصوبہ تجویز کرتی ہے تو اس کی ادائیگی تمام صوبے مل کرکریں گے لیکن اگر کوئی صوبہ کو منصوبہ شامل کرتاہے تو پھر اس کوادائیگی خود ہی کرناہوگی ۔

اس لیے ہماری کوشش ہے کہ گلگت چترال شاہ راہ کو وفاقی حکومت کے ذریعے شامل کرائیں انہوں نے کہاکہ سی پیک کے حوالے سے تو پہلے دوسا ل تک ہمیں مکمل بے خبر رکھاگیا جب ہم نے اے پی سی تو وفاقی حکومت نے ہمیں سے رابطہ رکھناشروع کیاسی پیک 2030ء تک مکمل ہوگا اس لیے بارہ سال میں ہم کئی پراجیکٹ لاچکے ہوں گے اس کے لیے انتظارکرنا پڑے گا ۔انہوں نے کہا کہ جو ن ازم کے پیچھے کوئی منظم سازش نہیں ہے۔

صوبائی بجٹ کا90فیصدانحصاروفاق سے ملنے والے محاصل پرہوتاہے ۔عمومی طور پر وفاق جون کے مہینے میں فنڈجاری کرتاہے جس کی وجہ سے صوبائی حکومت بھی اسی فنڈ کومختلف محکموں کو جاری تی ہے ۔اگروفاق ہمیں بروقت فنڈزکی فراہمی یقینی بنائے توصوبائی حکومت بھی بروقت فنڈزجاری کرے گی انہوں نے کہاکہ ا ب جون ازم کے خاتمے کے لیے حکمت عملی مرتب کرلی گئی ہے اور جولائی تک تمام محکموں کو پچاس فیصد فنڈز ریلیز کردیئے جائیں گے جبکہ مارچ تک تمام ریلیزز مکمل کریں گے ۔

انہوں نے کہاکہ سرکاری افسران کی مراعات وتنخواہوں میں مشروط اضافہ کی بات کی تھی میں اب بھی یہ کہتاہوں کہ مزیدمراعات کے لیے انکو سرکاری بنگلوں اور سرکاری گاڑیوں کی قربانی دینی ہوگی ا س سلسلے میں سکندر شیرپاؤ کی سربراہی میں قائم کمیٹی کی رپورٹ جیسے ہی آئے فوری عمل ہوگا دنیا میں کہیں بھی افسران کو بھاری مراعات کے ساتھ ساتھ سرکاری گاڑیوں اور گھروں کی سہولت حاصل نہیں ہے ہم بھی یہی چاہتے ہیں اور ایسا ہوا تو تنخواہوں میں مثالی اضافہ کیاجائے گا انہوں نے کہاکہ ممبران کے واپڈا کے حوالہ سے سکیموں کے لیے یکمشت ادائیگی کے لیے تیار ہیں اور اس وقت وفاقی حکومت کے پاس ہمارے 16ارب روپے باقی ہیں جیسے ہی یہ رقم ملے گی سکیموں کے لیے فراہم کردی جائے گی ۔