بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / افغان طالبان نے صوبہ ہلمند میں پولیس کے مرکز پر خود کش حملے کی ڈرون فوٹیج جاری کردی

افغان طالبان نے صوبہ ہلمند میں پولیس کے مرکز پر خود کش حملے کی ڈرون فوٹیج جاری کردی


لشکر گاہ۔ افغان طالبان نے صوبہ ہلمند میں پولیس کے ایک مرکز پر خود کش حملے کی ڈرون کی مدد سے تیار کی گئی وڈیو جاری کردی۔غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغان حکومت کے ایک عہدے دار نے بتایا کہ انٹرنیٹ پر جاری ہونے والی وڈیو حقیقی معلوم ہوتی ہے۔ وڈیو میں ایک خود کش بمبار کو دکھایا گیا ہے جو فوجیوں کی جانب سے استعمال کی جانے والی خصوصی گاڑی کو پولیس بیس کی جانب لے جاتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ طالبان عام طور پر وڈیو بنانے کے لیے ڈرون ٹیکنالوجی کا استعمال نہیں کرتے البتہ عراق و شام میں سرگرم بعض تنظیمیں اس ٹیکنالوجی کا استعمال کرتی رہی ہیں۔23 منٹ دورانیے کی یہ اس وڈیو میں ایک مشتبہ خود کش بمبار کو دکھایا گیا ہے جو فوجیوں کی گاڑی کے سامنے کھڑا ہے جو امریکی مشیروں کی جانب سے افغان فورسز کو دی گئی تھیں۔وڈیو میں موجود شخص یہ کہہ رہا ہے کہ یہ میری زندگی کا پر مسرت موقع ہے، میں افغانستان کی فورسز کو کہتا ہوں کہ وہ اپنے کیے پر شرمندہ ہو اور طالبان کا ساتھ دیں ورنہ جو آلات غیر ملکیوں نے انہیں دیے ہیں ہم انہیں ان ہی کے خلاف استعمال کریں گے اور وہ کچھ بھی نہیں کرسکیں گے۔کچھ دیر بعد ڈرون پر لگا کیمرا فلمبندی کرتا ہے کہ مذکورہ گاڑی ایک کمپاؤ نڈ کی جانب رواں ہے اور اسے کسی قسم کی مزاحمت کا سامنا نہیں کرنا پڑتا اور وہ بیس کے درمیان جاکر ٹکرا جاتی ہے جبکہ ہر طرف دھویں کے بادل نمودار ہوجاتے ہیں۔

ہلمند میں موجود ایک حکومتی عہدے دار نے بتایا کہ 3 اکتوبر کو ہونے والے اس خود کش حملے میں ڈسٹرکٹ پولیس چیف اور دیگر کئی عہدے دار ہلاک ہوئے تھے۔عہدے دار نے بتایا کہ حملے کی جاری ہونے والی وڈیو حقیقی معلوم ہوتی ہے۔اس وڈیو کو تیار کرنے والوں نے اس میں مختلف طرح کے گرافکس استعمال کیے ہیں جو عام طور پر شام و عراق میں داعش استعمال کرتی ہے۔واضح رہے کہ 2001 سے افغانستان میں طالبان کے خلاف جاری جنگ میں امریکی فورسز عکسری ڈرونز کا استعمال کرتے رہے ہیں۔جبکہ آج کل تفریحی مقاصد اور وڈیو بنانے کے لیے استعمال ہونے والے کمرشل ڈرونز بھی باآسانی اور سستے داموں دستیاب ہیں۔