بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / لیبیا میں دوبارہ مظاہرے پھوٹ پڑے

لیبیا میں دوبارہ مظاہرے پھوٹ پڑے

طرابلس ۔لیبیا کے سابق مقتول صدر معمر قذافی کے صاحبزادے سیف الاسلام قذافی کی جیل سے رہائی کے بعد ان کے حامی ان سے منظرعام پرآنے اور سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لینے کے لیے مظاہرے کررہے ہیں۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق گذشتہ روز لیبیا کے جنوبی شہر سبھا میں سینکڑوں افراد نے سیف قذافی کے منظرعام پرآنے کے لیے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں سیف قذافی کی تصاویر اٹھا رکھی تھیں۔

اس کے علاوہ ان کے ہاتھوں میں بینرز اور کتبے تھے جن پرسابق صدر کے صاحبزادے سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ وہ روپوشی کے بجائے عوام الناس میں آئیں اور لوگوں سے بات کریں۔سوشل میڈیا پر اس مظاہرے کی ایک فوٹیج بھی سامنے آئی ہیجس میں بڑی تعداد میں شہریوں کو سیف قذافی کی تصاویر اور ان کے حق میں نعروں پر مبنی پوسٹر اٹھائے دیکھاگیا ہے۔ مظاہرین کیہاتھوں میں سبز پرچم ہیں اور وہ سیف سے عوام الناس میں آنے اور باقاعدہ سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔اس موقع پر مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ لیبیا اس وقت عسکری گروپوں کے چنگل میں پھنس چکا ہے۔ ہرطرف مافیاؤں کی حکومت ہے اور ملک بدترین افراتفری کا شکار ہے۔

ایسے میں سیف قذافی کو عوام الناس میں نکل کر ملک کو نفرت، تقسیم اور لاقانونیت سے نکال کر امن و امان کا گہوارہ بنانے اور اسے متحدہ کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ واضح رہے کہ سیف قذافی کو گذشتہ ماہ لیبی پارلیمنٹ کی طرف سے عام معافی کے بعد رہا کیا گیا تھا۔ وہ اس وقت الزنتان شہر میں کسی مقام پرموجود ہیں۔ ان کے حامی ان سے جلد از جلد منظرعام پرآنے اور سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔