بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کی گلیات ریسٹ ہاؤسز بارے خصوصی ہدایات

وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کی گلیات ریسٹ ہاؤسز بارے خصوصی ہدایات


پشاور ۔ خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے کسی پروٹول کے بغیر گلیات کے مختلف علاقوں اور بازاروں کا دورہ کیا اور وہاں سیاحوں اور اہل علاقہ کو مہیا کی جانے والی سہولیات کے علاوہ انہیں درپیش مسائل سے آگاہی حاصل کی ۔ صوبائی وزیر اطلاعات و آبنوشی شاہ فرمان اور علاقے کے منتخب اراکان اسمبلی و بلدیاتی نمائندوں کے علاوہ گلیات ترقیاتی ادارہ کے حکام بھی انکے ہمراہ تھے۔ وزیر اعلیٰ نے ذاتی عملے، سکیورٹی اہلکاروں اور ڈرائیور کے بغیر پیدل چل کر اور خود گاڑی ڈرائیو کرتے ہوئے نتھیا گلی، چھانگا گلی، ڈونگا گلی ، باڑہ گلی، خانس پور اور ایوبیہ سمیت گلیات کے رہائشی اور تجارتی مقامات پر صحت و صفائی، آبنوشی اور دیگر بنیادی سہولیات کی صورتحال کا جائزہ لیا اور انکی بہتری کے لئے موقع پر احکامات جاری کئے ۔

انہوں نے نتھیا گلی بازار میں اشیائے خورد و نوش کی طلب و رسد، قیمتوں اور معیار کی صورتحال بہتر بنانے کے لئے نگرانی کا عمل زیادہ مؤثر بنانے کی ہدایت بھی کی۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ سیاحوں اور مقامی لوگوں میں گھل مل گئے جنہوں نے ان کے ساتھ سیلفیاں بنانے کے علاوہ اپنے مختلف انفرادی و اجتماعی مسائل و مشکلات سے بھی وزیر اعلیٰ کو آگاہ کیا۔ انہوں نے صوبے میں تبدیلی اور تعمیر و ترقی کے ٹھوس اقدامات پر وزیر اعلیٰ کو خراج تحسین پیش کیا۔ پرویز خٹک نے کہا کہ وہ گلیات اور دیگر سیاحتی علاقوں کے علاوہ صوبے بھر میں جاتے اور لوگوں سے ملتے رہیں گے تاکہ وہ خود دیکھ سکیں کہ لوگ صوبائی حکومت کے ترقیاتی اقدامات کے ثمرات سے کس قدر مستفید ہو رہے ہیں اور وہ کس حد تک مطمئن ہیں ۔

دریں اثناء وزیر اعلیٰ نے پختونخوا ہاؤس نتھیا گلی میں علاقے کے ارکان اسمبلی کے وفد سے ملاقات کی اور ان سے گلیات میں سیاحت کے فروغ اور تعمیر و ترقی کا عمل تیز کرنے کے حوالے سے مختلف امور پر تبادلہء خیا ل کیا۔ اس موقع پر اراکین اسمبلی مشتاق غنی، اکبر ایوب، سردار محمد ادریس، فیصل زمان ، محمود جان اور ڈاکٹر اظہر جدون کے علاوہ سیکرٹری بلدیات سید جمال الدین شاہ ،کمشنر ہزارہ ڈویثرن اکبر خان ، وزیر اعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری محمد اسرار خان اور جی ڈی اے کے ڈائریکٹر جنرل عنایت اللہ وسیم بھی موجود تھے۔ پرویز خٹک نے گلیات میں تمام سرکاری ریسٹ ہاؤسزمناسب ریٹ پر عام سیاحوں کے لئے کھولنے اورانکی آمدن میں کئی گنا اضافے پر اطمینان کا اظہار کیا ہے تاہم حکام کو سختی سے ہدایت کی کہ ریسٹ ہاؤسز کو کامیابی کے ساتھ چلانے کا بہترین طریقہ انکی نجی شعبے کو حوالگی ہے۔

بہتر ہے کہ انہیں تجارتی بنیادوں پر چلایا جائے تاکہ حکومتی آمدن میں اضافے کے علاوہ ریسٹ ہاؤسز کے معیار اور خدمات میں بھی مسلسل اضافہ ہوتا رہے۔انہوں نے سرکاری ریسٹ ہاؤسز میں ملازمین کی سیاحوں کے ساتھ حسن سلوک اورشائستہ برتاؤ کی سختی سے ہدایت کی ۔اس سلسلے میں انہوں نے حکام کو عملے کی تربیت اور ان میں ردوبدل سمیت ٹھوس اقدامات کی ہدایت بھی کی۔ڈی جی نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ کی ہدایت کے تحت محکمہ سیاحت میں گلیات کے 16سرکاری ریسٹ ہاؤسز جی ڈی اے کو حوالے کئے ہیں جس کے بعد انکی آمدن میں واضح اضافے کے علاوہ عام سیاحوں اور انکے اہل خاندان نے ان سے استفادہ کیا ہے۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ صرف نجی شعبہ ہی ان ریسٹ ہاؤسز کی بہتر دیکھ بھال اور سیاحوں کی تسلی کے مطابق خدمات مہیا کر سکتا ہے۔جبکہ حکومتی نگرانی میں یہاں صرف سرکاری ملازمین کو فوائد ملتے ہیں انہوں نے گلیات میں موجود تمام پارکوں کو بھی زیادہ خوبصورت اور پرکشش بنانے کی ہدایت کی اور اس مقصد کے لئے دستیاب وسائل کے علاوہ ارکان اسمبلی کے فنڈ زبھی بروئے کار لانے پر زور دیا۔بعد ازاں وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے مری کے قریب چھرہ پانی اور بنواڑی کے ما بین ڈولی چیئر لفٹ کے دلخراش واقعہ پر انتہائی افسوس کا اظہار کیا ہے جس میں بچوں اور خواتین سمیت درجنوں افراد جاں بحق اور زخمی ہوئے ہیں۔

انہوں نے اس سانحے میں جاں بحق افراد کی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کی اور غمزدہ خاندانوں سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا۔ وزیر اعلیٰ نے نجی طور پر اس طرح کے ناقص چیئر لفٹ بنانے کی حوصلہ شکنی کے لئے مقامی انتظامیہ اور لوگوں کی طرف سے مشترکہ آگاہی مہم چلانے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ ایسے افسوسناک واقعات کا مستقبل میں مؤثر طور پر تدارک ہو سکے۔