بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نواز شریف کے قریبی ساتھی کے حلفیہ بیان سے ہلچل

نواز شریف کے قریبی ساتھی کے حلفیہ بیان سے ہلچل

اسلام آباد۔وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے انتہائی قریبی ساتھی سیف الرحمن کا حلفیہ بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے تسلیم کیا ہے کہ بیرون ملک خطیر رقم بھجوانے کے نہ صرف وہ چشم دید گواہ ہیں بلکہ ایک سہولت کار کے طور پر بھی وہ مذکورہ بنک اکاؤنٹ ہولڈرز کی غیر قانونی مدد بھی فراہم کرتے رہے ہیں ۔حلفیہ بیان میں انہوں نے کہا کہ وہ حبیب بنک مال روڈ ایمپورٹ ڈیپارٹمنٹ میں تعینات تھے تو اس دوران عروج ٹیکسٹائل اور چنار شوگر ملز کے کرتا دھرتا جاوید کیانی نامی ایک شخص آیا۔

جاوید کیانی چونکہ ایک جانی پہچانی شخصیت ہونے کے ساتھ ساتھ ان کا بنک میں بہت آنا جانا تھا کیونکہ دو ملوں کے حساب وغیر ہ کی وہ نگرانی کرتے تھے،جاوید کیانی نے 1992میں کہا کہ انکے جاننے والے ہیں جن کے مذکورہ بنک میں اکاؤنٹ کھولے جائیں ،انکی درخواست پرتینوں افراد کا نام میں نے لکھ لیا ،دوسرے دن جاوید کیانی کو بذریعہ فون بتایا کہ کسی آدمی کو بھیج دیں جو کہ فارم لے جائیں ،تو اسی اثناء میں جاوید کیانی نے ان اشخاص کو بھیجا جن کے نام لکھوائے گئے تھے وہ آئے اور فارم لے گئے۔دوسرے دن فارم پر ہوکر آگئے اور بنک منیجر امیتاز احمد باجوہ کے احکامات پر اکاؤنٹ کھول دیے گئے ۔

سیف الرحمن نے اپنے حلفیہ بیان میں کہاکہ بنک منیجر کی منظوری کے بعد اصغر علی نامی شخص کو اکاؤنٹ نمبر 106578جبکہ سلیمان کو 106561نمبر کا اکاؤنٹ کھولا گیا۔سیف الرحمن نے انکشاف کیا کہ مذکورہ اکاؤنٹ ہولڈرز کے فارم پرجاوید کیانی کے کہنے پر لکھا گیا تھا کہ انکے ساتھ کوئی خط وکتابت نہ کی جائے کیونکہ لگتا یوں تھا کہ ایڈریس عارضی ہیں ۔سیف الرحمن کے مطابق مذکورہ بنک اکاؤنٹس میں بذریعہ ٹریولز چیک جمع ہوتے تھے جس پر ڈی پی سی جاری ہوتی تھی پھر دھیرے دھیرے ٹی ٹی بھی آتی رہی ہیں جو کہ بیرون ملک جاتی تھیں۔

سیف الرحمن کے مطابق مذکورہ اکاؤنٹس ہولڈرز کو انہوں نے نہیں دیکھا کہ بنک آتے بھی تھے یا نہیں اگر کبھی آئے بھی ہیں تو انہیں یاد نہیں ہے ۔اور جب رقم نکلوانے کا معاملہ ہوتا تو جاوید کیانی مجھے یا وجاہت کو فون کرتے اتنی رقم درکار ہے جو کہ انہیں دی جاتی رہی ہے ۔سیف الرحمن حلفیہ بیان کے مطابق تمام رقم کی ٹرانزکشن جاوید کیانی نامی شخص کے ذریعہ ہوتی رہی ہے چونکہ انہی کے کہنے اکاؤنٹ کھولے گئے تھے ۔