بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / بھارت اور چین کے مابین سرحدی تنازعہ میں شدت

بھارت اور چین کے مابین سرحدی تنازعہ میں شدت

نئی دہلی۔ بھارت اور چین کے مابین سرحدی تنازعہ نے شدت اختیار کر لی ہے۔ بھارت کے وزیر دفاع ارون جیٹلی نے سکم کے علاقے میں سرحد پر بڑھتی کشیدگی کے پیش نظر چین کی دھمکی کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ 1962 اور 2017 کے حالات میں بہت فرق ہے۔

بھارت کے وزیر دفاع ارون جیٹلی نے کہا کہ بھوٹان نے بیان دیا ہے کہ چین جہاں سڑک کی تعمیر کر رہا ہے وہ اس کی زمین ہے۔بھوٹان اور بھارت کے درمیان سیکورٹی کے معاملات میں باہمی تعاون قائم ہے لہذا بھارتی فوج اس مقام پر ہے۔دوسری جانب تبت کے ٹرائی جنکشن پر بھارت اور چین کے درمیان کشیدگی بڑھتی جارہی ہے اور دونوں ممالک نے ٹرائی جنکشن پر تین تین ہزار فوجیوں کو تعینات کر دیا ہے۔ادھر بھارتی فوج کے سربراہ بپن راوت نے بھی صورت حال کا جائزہ لینے کے لئے گذشتہ روز گنگٹوک میں واقع 17 مانٹین ڈویژن اور لمپونگ میں واقع 27 مانٹین ڈویژن کا دورہ کیا جس پرچین نے سخت اعتراض کیا ہے۔

واضح رہے کہ ٹرائی جنکشن پردونوں ممالک کے فوجی برسہا برس سے تعینات ہیں ، لیکن ڈوا لا جنرل پر فوجیوں کی حال میں ہوئی تعیناتی کافی سنگین ہے اوردونوں ممالک اپنے مقام سے ہٹنا نہیں چاہتے