بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / مودی اسرائیل کا دورہ کرنے والے پہلے بھارتی وزیراعظم

مودی اسرائیل کا دورہ کرنے والے پہلے بھارتی وزیراعظم

یروشلم۔بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اسرائیل کے 3 روزہ دورے کے دوران اسرائیلی قیادت سے ملاقاتیں کریں گے جبکہ دونوں ممالک کے درمیان اربوں ڈالر کے دفاعی معاہدے ہونے کا بھی امکان ہے۔واضح رہے کہ اسرائیل کو ہمیشہ سے ہی اقوام متحدہ میں اپنے حق میں ووٹ حاصل کرنے کے لیے اتحادیوں کی تلاش رہتی ہے اور وہ ایسے ممالک کے ساتھ کاروباری روابط بھی استوار کرنے کی خواہش رکھتا ہے۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق آج سے شروع ہونے والا نریندر مودی کا دورہ اسرائیل کسی بھی بھارتی وزیراعظم کا اسرائیل کا پہلا دورہ ہے جس کے بارے میں اسرائیلی حکام کا خیال ہے کہ یہ ایک تاریخی دورہ ثابت ہوگا۔ اسرائیلی تجزیہ نگاروں کا ماننا ہے کہ نریندر مودی اپنے تین روزہ دورے میں رملہ میں فلسطینی قیادت سے ملاقاتیں نہیں کریں گے۔تاہم فلسطینی صدر محمود عباس رواں برس مئی میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے نئی دہلی میں ملاقات کر چکے ہیں۔

اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو نے 25 سال قبل قائم ہونے والے بھارت-اسرائیل سفارتی روابط کی تاریخ کی روشنی میں نریندر مودی کے اس دورے کو ایک کامیاب دورہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس دورے سے اسرائیل کی فوجی قوت میں اضافہ ہوگا اور ملکی معیشت میں مضبوطی آئے گی جبکہ اسرائیل سفارتی سطح پر بھی مزید مستحکم ہوگا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ بھارت اور اسرائیل کے درمیان تعلقات مزید مستحکم کرنے کے لیے ایک انتہائی اہم دورہ ہیاسرائیل اور بھارت کے درمیان تعلقات مستحکم ہو رہے ہیں جبکہ تقریبا 80 لاکھ آبادی والے اسرائیل کے لیے نریندر مودی کا یہ دورہ ایک سفارتی جیت ہے جبکہ اس دورے میں دونوں ممالک کے مفادات بھی شامل ہیں۔

ایک ارب سے زائد آبادی والا ملک بھارت دنیا میں ہتھیاروں کی درآمد کے حوالے سے سب سے بڑا ملک ہے جبکہ اسرائیل بھارت کو ہتھیار فراہم کرنے والا سب سے اہم ملک ہے۔اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق دونوں ممالک 1 ارب ڈالر تک کے سالانہ دفاعی معاہدوں پر غور کر رہے ہیں۔