بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وزیر اعلیٰ کی نوشہرہ میڈیکل کالج کو فعال بنانیکی ہدایت

وزیر اعلیٰ کی نوشہرہ میڈیکل کالج کو فعال بنانیکی ہدایت

خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے نوشہرہ میڈیکل کالج اور ہسپتال کو مکمل طور پر فعال بنانے کی ہدایت کی ہے انہوں نے ہدایت کی کہ سالانہ ترقیاتی پروگرا م میں شامل سکیمیں ڈراپ ہو سکتیں ہیں اور نہ ہی اُن میں ردوبدل کیا جاسکتا ہے۔انہوں نے کالجوں اور ہسپتالوں پر مشتمل سکیموں کی فہرست تیار کرکے پیش کرنے اورسکیمیں ٹائم لائن کے اندر مکمل کرنے کی ہدایت کی ۔ٹائم فریم پر چلنا ضروری ہے ۔سکیموں کی تکمیل میں تاخیر کی کوئی گنجائش موجود نہیں۔

ناگزیر صورتحال کے پیش نظر کسی بھی سکیم کی ٹائم لائن میں توسیع کی وجوہات بتانا ہوں گی بصورت دیگر ذمہ داران جوابدہ ہوں گے ۔وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں نوشہرہ میڈیکل کالج اور ہسپتال کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔محکمہ صحت ، مواصلات و تعمیرات اور خزانہ کے انتظامی سیکرٹریوں ، فرنٹیرورکس آرگنائزیشن کے ڈائریکٹر جنرل اور پراجیکٹ ڈائریکٹر ، نوشہرہ میڈیکل کالج کے پرنسپل اور دیگر اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی ۔

وزیراعلیٰ نے نوشہرہ میڈیکل کالج اور ہسپتال کی فزیکل پراگرس رپورٹ طلب کی اور ہدایت کی کہ ستمبر تک کالج اور ہسپتال ہر حال میں اور مکمل طورپر فعال ہونے چاہئیں ۔فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن اپنی ذمہ داری پوری کرے اور وقت پر کام کی تکمیل یقینی بنائے ۔وزیراعلیٰ نے میڈیکل کالج کو علیحدہ اور کالج کی یو ٹیلٹیز کو علیحدہ رکھنے کی ہدایت کی ۔انہوں نے 50کنال اراضی پر مشتمل گرین لینڈ پر سبزہ اُگانے اور رکاوٹیں دور کرکے کام کی رفتار تیز کرنے کی ہدایت کی۔

پرویز خٹک نے ہدایت کی کہ صحت اور عوامی فلاح کے مسائل بروقت حل ہونے چاہئیں۔انہوں نے کہاکہ عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں کی سست روی اور تاحال مکمل نہ ہونے پر اُنہیں سخت تشویش ہے ۔متعلقہ حکام تیز رفتار طریقہ کار بنائیں اور مکمل کریں ۔ طے شدہ ٹائم لائن کے اندر منصوبوں کی تکمیل ضروری ہے ۔وزیراعلیٰ نے سکیموں کیلئے نظر ثا نی لاگت اور مکمل پلان کی منظوری دیتے ہوئے ہدایت کی کہ ایک مکمل فہرست بنائیں جو کام پہلے ہو سکتا ہے وہ پہلے مکمل کریں ۔ فلیٹس کی حوالگی بھی اس میں شامل ہے ۔20کے اندر فلیٹس مکمل کر کے کالج انتظامیہ کے حوالے کریں ۔انہوں نے کہاکہ سب کیلئے ایک ہی قانون اور ایک ہی فارمولا ہونا چاہیئے ۔

کام میں تاخیر کی صورت میں قانون کے مطابق نقصانات کا ازالہ کرنا ہو گا ۔پرویز خٹک نے کہاکہ سکیموں کی بروقت تکمیل پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا۔ایف ڈبلیو او کے پراجیکٹ ڈائریکٹر اور دیگر متعلقہ حکام سیکرٹری صحت کے ساتھ مل بیٹھ کر میڈیکل کالج اور ہسپتال کے مسائل اور مطالبات تیار کریں ۔مرحلہ وار وسائل فراہم کئے جائیں گے ۔تمام محکمے اور ذمہ داران آن بورڈ رہیں ۔ منصوبہ بندی میں یکسوئی ہونی چاہیئے اور مقصد عوامی فلاح کا ہونا چاہیئے تاکہ عوام کو تکلیف نہ ہو ۔

عوامی فلاح و بہبود حکومت کی ذمہ داری ہوتی ہے ۔ہمارا پلان آنے والے کل کیلئے ہے ۔وسائل فراہم کر رہے ہیں تو ذمہ داری کا احسا س بھی ہونا چاہیے اور عوامی فلاح کی سکیمیں بروقت مکمل ہونی چاہئیں ۔قبل ازیں ایک اجلاس کی صدارت کر تے ہوئے وزیراعلیٰ نے بس ریپیڈ ٹرانزٹ منصوبے کے تناظر میں فرنٹیر ورکس آرگنائزیشن کو شروع کر دہ یوٹیلٹیز پر کام کی رفتار تیز کرکے 30 جولائی تک ہر حال میں مکمل کرنے کی ہدایت کی ۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ اب ماس ٹرانزٹ منصوبے پر کام شروع کرنا ہے ۔ اس سے قبل دونوں اطراف میں یوٹیلیٹیز کی منتقلی مکمل اور سڑک تیار ملنی چاہئے ۔ ہم ریپڈ بس ٹرانزٹ میں تاخیر کے متحمل نہیں ہو سکتے۔ہم اس کے لئے مزید انتظار نہیں کر سکتے ۔معاہدے کے مطابق پورے یونیورسٹی روڈ سمیت تمام یوٹیلٹیز پر کام مکمل ہونا چاہیئے ۔کوتاہی اور غفلت کی گنجائش موجود نہیں۔ یونیورسٹی روڈ کے دونوں اطراف میں کام مکمل ہونا چاہیئے ۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ جب ہمارا عزم مکمل ہے تمام لوازمات اور شرائط پوری کی ہیں تو اب عمل درآمد میں سستی ناقابل قبول ہے۔اس موقع پر ایف ڈبلیو اور کے اعلیٰ حکام نے یقین دہانی کرائی کہ 30 جولائی تک تمام کام مکمل کرکے دیں گے ۔