بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / چترال میں صاف پانی کی فراہمی کیلئے 73منصوبوں پر کام جاری

چترال میں صاف پانی کی فراہمی کیلئے 73منصوبوں پر کام جاری

پشاور۔خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات و تعلقات عامہ اور آبنوشی شاہ فرمان نے کہا ہے صوبہ بھر میں بلا امتیاز صاف پینے کے پانی کی فراہمی کیلئے متعددمنصوبوں پر کام جاری ہے، چترال میں صاف پینے کے پانی کی فراہمی کیلئے 73منصوبوں پر کام جاری ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز چترال کے علاقہ دروش میں عومی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر صوبائی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ صاف پینے کا پانی ایک بنیادی مسئلہ ہے جس پر قابو پانے کے لئے صوبائی حکومت نے ایک جامع پلان تشکیل دیا ہے جس کے نتیجے میں پہاڑی علاقوں اور جنوبی اضلاع میں صاف پینے کا پانی عوام کو بلا تعطل فراہم کیا جا سکے گا۔

انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں بجلی کی ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے عوام کو بروقت پانی کی سپلائی متاثر ہو رہی ہے اور اس حقیقت کو مدنظر رکھتے ہوئے صوبائی حکومت صوبہ بھر میں ٹیوب ویلز کو شمسی توانائی پر منتقل کر رہی ہے اور صوبہ کے متعدد علاقوں میں شمسی توانائی سے ٹیوب ویلوں کو چلایا جا رہا ہے جس سے وہاں کے عوام کو بلا تعطل پانی کی سپلائی ممکن ہو رہی ہے، شاہ فرمان کا کہنا تھا کہ چترال کے علاقہ دروش میں 3کروڑ روپے کی لاگت سے صاف پینے کے پانی کی فراہمی کے لئے پائپ لائن توسیع منصوبہ پر کام شروع کیا جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ تحریک انصا ف کی موجودہ صوبائی حکومت صوبہ بھر میں بلا امتیاز ترقیاتی اقدامات اٹھا رہی ہے لیکن وفاق کے نامناسب رویہ کی وجہ سے صوبائی حکومت کو متعدد مسائل کا سامنا ہے۔

پنجاب میں تمام بڑے ترقیاتی منصوبے وفاق کے زیر انتظام چل رہے ہیں لیکن خیبر پختونخوا کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جا رہا ہے، صوبائی وزیر اطلاعات نے مزید کہا کہ تحریک انصاف نے خیبر پختونخوا میں پہلی مرتبہ حکومت بنائی اور صوبہ میں ایک منفرد طرز حکمرانی کو جنم دیا اور صوبہ کی تاریخ میں پہلی بار سرکاری اداروں میں انقلابی اصلاحات اٹھائے ہیں جس کی بدولت آج عوام کو سرکاری اداروں سے فوری اور بروقت خدمات حاصل ہو رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے گزشتہ ادوار میں بر سر اقتدار حکمران ٹولہ نے عوامی مفادات کے بجائے ذاتی مفادات کو ترجیح دی اورصوبہ کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا لیکن آج صوبہ میں حقیقی معنوں میں ایک عوامی حکومت ہے اور صوبہ کے تمام وزراء، اراکین اسمبلی عوام کے سامنے جوابدہ ہیں، شاہ فرمان کا کہنا تھا کہ موجودہ صوبائی حکومت کی کارکردگی عوام کے سامنے ایک کھلی کتاب کی مانند ہے، معلومات تک رسائی اور خدمات کی فراہمی جیسے متعدد قابل قدر قوانین بنا کر صوبائی حکومت نے خود کو عوام کے سامنے پیش کیا ۔ انہوں نے چترال کے عوام سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ یہاں کے لوگ قابل اور ذہین ہیں اور ماضی کی حکومتوں کی کارکردگی سے بخوبی واقف ہیں اور ہم امید کرتے ہیں چترال کے لوگ موجودہ صوبائی حکومت کی کارکردگی کو مدنظر رکھتے ہوئے آئندہ عام انتخابات میں تحریک انصاف کو چترال سے بھاری اکثریت سے کامیاب کرائیں گے۔