بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پولیس ایکسیس سروس نظام سے عوام پولیس کی نگران

پولیس ایکسیس سروس نظام سے عوام پولیس کی نگران


پشاور ۔انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختون خوا صلاح الدین خان محسود نے کہا ہے کہ پولیس فورس کے سکیل کی آپ گریڈیشن بہت جلد ہو جائے گی اور ساتھ ساتھ شہداء پیکج بھی بہتر ہو جائے گا۔وہ آج ڈیرہ اسماعیل خان پولیس لائن میں ڈیرہ ریجن کے پولیس جوانوں کے ایک دربار سے خطاب کررہے تھے۔ دربار میں فورس کے مختلف یونٹوں اور شعبوں کے ہر رینک کے افسر وجوانوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ ریجنل پولیس آفیسر ڈیرہ اسماعیل خان، ڈی پی اُو ڈیرہ اسماعیل خان، ڈی پی اُو ٹانک اور دیگر رینک کے اعلیٰ پولیس حکام بھی اس موقع پر موجودتھے۔پولیس سربراہ نے کہا کہ آج کے اور دس سال پہلے کی خیبر پختونخوا پولیس میں نمایاں فرق ہے۔ آج ہمارے پاس سپشلائیزڈ ٹریننگ ادارے ہیں، ٹیکنالوجی ہے، میرٹ پر بھرتی شدہ افسران و جوان ہیں اور سب سے بڑھ کر عوام کا اعتماد ہے۔ ہمیں اس اعتماد اور توقعات پر پورا اترنا ہے۔

آئی جی پی نے کہا کہ انہیں دہشت گردی سے بے خطر ہو کر سرخرو ہونے والی پولیس کی کمانڈپر فخر ہے اور کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ اب بھی جاری ہے۔ خدشات اب بھی موجود ہیں۔ ہمیں اپنے گھروں کو، اپنے بازاروں کو، اپنی گلیوں کو اوراپنے بچوں کو محفوظ بنانا ہے اور اس کے لیے ہر قسم کی قربانی دیکر اپنے شہیدوں کا سربلند رکھیں گے ۔انہوں نے کہا کہ پولیس شہدا ہمارا فخر ہیں۔ ان کے ورثاء کے ہر مسئلے کا حل نکالا جائے گا۔ آئی جی پی نے کہا کہ انہیں فورس کی ضروریات کا بخوبی انداز ہے۔ فورس کی ویلفیئرکی مد میں اخراجات کو دگنا کردیا ہے۔

اب پولیس کوبھی عوام کے حقوق کی حفاظت کی اولین ذمہ داری کو ہر قیمت پرپوری کرنی ہوگی۔پولیس سربراہ نے کہا کہ ہم میں سے ہر کسی نے خود سے یہ سوال پوچھناہے کہ کیا بہتر ٹریننگ، بہتر وسائل اور بہتر سہولیات پاکر کیا ہمارا عوام کے ساتھ رویہ بہتر ہوا ہے؟۔ آئی جی پی نے کہا اگر چہ امن و آمان میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ پچھلے تین سال میں دہشت گردی میں 75 فیصد سے زیادہ کمی ہوئی ہے۔ اس کے باوجود اگر عوام گلی میں، سٹرک پر، بازار میں، پولیس اسٹیشن میں اور کسی بھی جگہ ہمیں اپنا محافظ نہ سمجھیں تو پھر یہ ساری کامیابیاں بے معنی ہیں۔ اور کہا کہ پولیس کو اپنے رویوں میں مزید تبدیلی لانی ہوگی۔ آئی جی پی نے کہا کہ پولیس ایکسیس سروس (PAS) کے نظام سے عوام براہ راست انہیں پولیس کے رویئے کی خبر دیتی ہے۔ آنے والے مہینے میں پولیس ایکسیس سروس کے نظام سے عوام کو پولیس کا نگران بنادیں گے۔

اورپولیس پر زور دیا کہ وہ اپنے آپ کو اس تبدیلی کے لیے تیار کریں۔ آئی جی پی نے دربار کے شرکاء کو ہدایت کی کہ وہ پولیس ایکٹ 2017 کو پڑھیں اورسمجھیں اور اپنے آپ کو عوام کے سامنے جوابدہی اور عوامی نگرانی کے لیے تیار کریں۔ آئی جی پی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ خیبر پختونخوا پولیس کی کامیابیوں کا سفر ہر قیمت پر جاری رکھا جائے گا۔ آئی جی پی نے دربارمیں مختلف اوقات میں فرائض کی انجام دہی کے دوران دہشت گردوں اور دیگر جرائم پیشہ افراد کے خلاف بہترین نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے افسروں و جوانوں میں نقد انعامات اور توصیفی اسناد تقسیم کئے۔

آئی جی پی نے ڈیرہ اسماعیل خان تنازعات کے حل کے کونسلوں کے ارکان اور علاقے کے عمائدین اور مشران سے بھی خطاب کیا اور عوام کے چھوٹے چھوٹے تنازعات او رمسائل کے حل کے لیے ان کی گراں قدر خدمات کی تعریف کی۔ آئی جی پی نے کہا کہ عوام کے بھر پور اعتماد ار تعاون کے پیش نظر صوبہ بھر میں تنازعات کے حل کے کونسلوں کو مزید فعال اور مضبوط بنایا جائے گا۔آئی جی پی نے ڈیرہ اسماعیل خان پولیس شہداء کے ورثاء سے بھی ملاقات کی اور ان کو درپیش مسائل و مشکلات سے آگاہی حاصل کی اور متعلقہ پولیس حکام کو شہداء کے ورثاء کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرانے کی ہدایت کی۔آئی جی پی نے اس موقع پر پولیس شہداء کے ورثا ء میں تخائف تقسیم کئے اور شہداء کی یادگار پر پھول بھی چڑھائے۔