بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پشاور کے سرکاری سکول ٹاپ پوزیشن میں نہ آسکے

پشاور کے سرکاری سکول ٹاپ پوزیشن میں نہ آسکے


پشاور۔تحریک انصاف کی صوبائی مخلوط حکومت کے تمام تر اقدامات ٗ محکمہ ابتدائی و ثانوی تعلیم میں اصلاحات اور اساتذہ کی تربیت پر اربوں روپے خرچ کرنے کے باوجود ثانوی و اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ پشاور کے زیراہتمام میٹرک کے سالانہ امتحانات کے نتائج میں ٹاپ پوزیشنز تو درکنار کوئی سرکاری سکول ٹاپ 20میں جگہ نہیں بنا سکی۔

حالانکہ ٹاپ 20 میں نجی سکولوں کے 82طالبہ شامل ہیں پشاور تعلیمی بورڈ نے گزشتہ روز میٹرک کے سالانہ امتحانات کے نتائج کا اعلان کیا تاہم بدقسمتی سے ہمیشہ کی طرح اس مرتبہ بھی کسی سرکاری سکول کا طالب علم اعلیٰ اور نمایاں نمبر حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوا ۔

حکمران جماعت تحریک انصاف نے اقتدار سبنھالنے کے پہلے روز سے صوبے میں تعلیمی ایمرجنسی نافذ کر رکھی ہے اور اس وقت تعلیم پر 139ارب روپے سالانہ خرچ کئے جا رہے ہیں ٗ جس میں اربوں روپے اساتذہ کی تربیت پر بھی خرچ ہو رہے ہیں تاہم اس کے باوجود سرکاری سکول بورڈ کے امتحانات میں خاطرخواہ نتائج دینے سے قاصر ہیں ۔