بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / جرمنی میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں

جرمنی میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں

ہیمبرگ۔جرمنی کے شہر ہیمبرگ میں جی 20کے اجلاس کے موقع پر مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں ہوئی ہیں۔ شہر میں احتجاجی مظاہروں میں تقریبا 70پولیس اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔کئی مظاہرین کے بھی زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ تین پولیس افسران کو ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔سربراہی کانفرنس کے موقع پر ‘ویلکم ٹو ہیل’ کے نام سے احتجاجی مارچ کا اہتمام کیا گیا تھا جس میں تقریبا 12000مظاہرین شامل ہوئے۔ پولیس اور مظاہرین میں جھڑپیں اس وقت شروع ہوئیں جب پولیس نے اس میں شامل نقاب پوش مظاہرین کے خلاف کارروائی شروع کی۔

نقاب پوش مظاہرین نے جب بوتلیں اور پتھر پھینکنے شروع کیے تو پولیس نے ان پر تیز دھار پانی اور مرچوں کے پاڈر کا چھڑکا ؤکیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ انھیں اس وقت کارروائی کرنی پڑی جب سیاہ لباس پہننے والے تقریبا ایک ہزار مظاہرین نے اپنے نقاب ہٹانے سے انکار کر دیا۔ اس دوران گاڑیوں کو آگ لگا نے اور توڑ پھوڑ کے کئی واقعات کی خبریں ہیں۔پہلی بار جب پولیس سے تصادم شروع ہوا تو مظاہرین نے اپنا مارچ منسوخ کر دیا لیکن وہیں موجود رہے اور دیگر علاقوں کی طرف نکلنے لگے جس سے تشدد دوسرے علاقوں میں بھی پھیل گیا۔مارچ کے دوران کئی مظاہرین کے بھی زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں اور ڈاکٹروں کو لوگوں کا وہاں پر علاج کرتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔

ہیمبرگ میں کانفرنس کے موقع پر 25 ہزار پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے جنھوں نے شہر کے اہم علاقوں کو اپنے حصار میں لے رکھا ہے تاکہ مظاہرین کو کانفرنس کے مقام تک جانے سے روکا جا سکے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کانفرنس سے پہلے ہی جرمن چانسلر انگیلا مرل سے ملاقات کر چکے ہیں۔ جرمن حکومت کے ایک ترجمان کے مطابق دونوں رہنماؤں کی ایک گھنٹے کی بات چیت میں شمالی کوریا، مشرق وسطی، یوکرین اور جی -20 سے منسلک دیگر مسائل پر تبادلہ خیال ہوا۔