بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / سپریم کورٹ کا چیرمین ایس ای سی پی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم

سپریم کورٹ کا چیرمین ایس ای سی پی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم

 اسلام آباد: سپریم کورٹ نے ریکارڈ ٹیمرنگ اور اپنے ماتحتوں کو ڈرانے دھمکانے پر چئیرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا۔

سپریم کورٹ میں جے آئی ٹی کی رپورٹ پر پاناما کیس کی سماعت ہوئی۔ کیس کی سماعت جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں جسٹس اعجاز لاحسن اور جسٹس عظمت سعید نے کی۔دوران سماعت سیکیورٹی ایکسچینج کمیشن آف پاکستان ( ایس ای سی پی) کے ریکارڈ ٹیمرنگ معاملے پر بھی بحث ہوئی۔ چئیرمین ایس ای سی پی ظفرحجازی کی جانب سے ان کے وکیل پیش ہوئے۔

جسٹس اعجاز الااحسن نے ریمارکس دیئے کہ ایف آئی اے رپورٹ میں سنجیدہ الزامات ہیں ظفرحجازی نے اپنے ماتحتوں کو ڈرایا اور دھمکایا اور عدالت سے بھی جھوٹ بولا، ظفر حجازی نے پہلے ریکارڈ مسخ کرنے سے انکار کیا پھر کہا میرا کوئی تعلق نہیں۔

جسٹس عظمت سعید کا کہنا تھا کہ ظفرحجازی نے ماتحت افسران کو گلگت اور جیل بھیجنے کی دھمکیاں دیں ان کے خلاف آج ہی مقدمہ درج ہونا چاہئے، اب یہ دیکھنا ہے کہ ریکارڈ ٹیمرنگ کس نے اور کس کے کہنے پر کی۔

جسٹس عظمت سعید نے اٹارنی جنرل کو مخاطب کرتے ہوئے ایک بار پھر کہا مسٹر اٹارنی جنرل آپ سے آج ہی مقدمہ درج کرنے کا کہا ہے۔ جس پر اٹارنی جنرل نے جواب دیا جی میں نے سن لیا ہے۔