بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / شریف خاندان کا نام ای سی ایل میں شامل کیا جائے ٗ عمران خان

شریف خاندان کا نام ای سی ایل میں شامل کیا جائے ٗ عمران خان


اسلام آباد۔پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے جے آئی ٹی کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد وزیراعظم نواز شریف سے ایک بار پھر فوری استعفے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے پاس استعفے کے سوا کوئی دوسرا راستہ نہیں ، شریف خاندان 30 سال سے ملک کو لوٹ رہا ہے، نواز شریف کا نام گاڈ فادر ٹھیک رکھا گیا، ان کے سارے خاندان کا نام ای سی ایل میں ڈالاجائے،میں جو کہہ رہا تھا وہ سب چیزیں سامنے آ گئیں۔

مریم نواز کی نیسلن اور نیسکول کی ملکیت ثابت ہو گئی، ہمارے ٹیکس پہ چلنے والا آئی بی شریف خاندان کی کرپشن بچا رہا ہے، گیم ختم ہو گئی ہے ، اب دیکھنا یہ ہے کہ انہوں نے کس دن وزیراعظم ہاؤس چھوڑنا ہے، شریف خاندان کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے، چھوٹے گاڈ فادر شہباز شریف بھی استعفیٰ دیں، اب سٹریٹ موومنٹ کی ضرورت نہیں رہی مگر اب گلیوں میں خوشیاں منائی جائیں گی۔ وہ پیر کو جے آئی ٹی کی رپورٹ آنے کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ عمران خان نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ کے بعد وزیراعظم نواز شریف فوری استعفیٰ دیں، انصاف کو روکنے کے لئے بہت کوشش کی گئی، مجھے دھمکیاں دی گئیں۔

میرے خلاف ریفرنسز بنائے گئے، آج تمام چیزیں سامنے آ گئی ہیں، سپریم کورٹ میں آئی بی کا کردار سامنے آ گیا ہے،سپیکر قومی اسمبلی نے ان کا ریفرنس بھیجنے کی بجائے میرا ریفرنس بھیج دیا۔ عمران خان نے کہا کہ وزیر اعظم کو 5میں سے 2ججز نے نا اہل قرار دیا،3نے مزید تحقیقات کا کہا، ہمارے تمام خدشات آج سچ ثابت ہو گئے۔ انہوں نے اپنی چوری چھپانے کیلئے قومی اداروں کو تباہ کیا، نواز شریف نے پوری قوم سے جھوٹ بولا۔ انہوں نے کہا کہ آج ثابت ہو گیا ہے کہ فلیٹس کی اصل مالک مریم نواز ہیں، نواز شریف کس منہ سے حکومت کریں گے، قرضوں کی وجہ سے غربت بڑھتی ہے، ڈالر کی کمی ہونے پر ہمیں قرضے لینے پڑتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ خاندان 30 سال سے ملک لوٹ رہا ہے، نواز شریف کے سارے خاندان کا نام ای سی ایل میں ڈالاجائے۔ انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی ارکان کو مکمل سیکیورٹی دی جائے،میرے خلاف ہرجانہ دائر کرنے پر شہباز شریف کو شرم آنی چاہیے، عوام کے ٹیکس کے پیسوں سے میر شکیل الرحمن کو خریدا گیا۔ عمران خان نے کہا کہ ان چوروں پر اربوں روپوں کی کرپشن ہے، ہم بنگلہ دیش سے بھی پیچھے چلے گئے ہیں، اب ایک پولیس والا بھی نواز شریف کی بات نہیں مانے گا۔

یہ جمہوریت کے لئے ہماری جدوجہد کا ایک تسلسل ہے، جس کے نتیجے میں نئی نئی چیزیں سامنے آ رہی ہیں، نواز شریف دبئی کی کمپنی سے چیئرمین نکل آئے۔ انہوں نے کہا کہ میچ ختم ہو گیا ہے، دیکھنا ہے کہ کس دن وزیراعظم ہاؤس خالی کرتے ہیں، سپریم کورٹ پر ان لوگوں نے حملہ کیا۔