بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / بجلی نادہندہ افسران کے کیسز نیب کو بھیجنے کا فیصلہ

بجلی نادہندہ افسران کے کیسز نیب کو بھیجنے کا فیصلہ

پشاور۔وفاقی وزار ت پانی وبجلی نے خیبر پختونخوا کی مختلف سرکاری رہائشگاہوں میں رہائش پذیر سرکاری افسران کی جانب سے اپنی تعیناتی کے دوران سرکاری رہائش گاہوں کے ذمے بجلی کے بقایا جات ادانہ کرنے اور ایسی سرکاری رہائش گاہوں کو نادہندہ قرار دینے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ایسی سرکاری رہائشگاہوں کے ذمے بجلی کے واجبات فوری طورپر اداکرنے اورسرکاری خزانے کو نقصان پہچانے کے ذمے دار افسران کے کیسز نیب کو ارسال کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

اس سلسلے میں پیسکو پشاور کی جانب سے ڈپٹی کمشنر کرک کی سرکاری رہائش گاہ کے ذمے بجلی کی مد میں واپڈا کے واجب الادا بیس لاکھ روپے سے ذائد کی رقم کی ادائیگی کے سلسلے میں کمشنر کرک کو لکھے گئے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ وفاقی وزار ت پانی وبجلی نے اس بات کا سخت نوٹس لیا ہے کہ صوبے کی سرکاری رہائش گاہوں میں مقیم سرکاری افسران اپنی تعیناتی کے دوران بجلی کے بل ادا نہیں کرتے بلکہ ایسی رہائش گاہوں کو نادہندہ اداروں میں بدل دیا جا تا ہے جبکہ دوسری طرف نیب نے ایسے اقدام کو قانونی جرم قرار دیتے ہوئے سرکاری خزانے کو نقصان پہنچا نے والے افسران کے کیس نیب کا ارسال کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مراسلے میں ضلع کرک کے ڈپٹی کمشنر کی سرکاری رہائش گاہ کے ذمے بجلی کے بلوں کی مد میں واجب الادا رقم کی مثال دیتے ہوئے کیا گیا ہے کہ مذکورہ سرکاری رہائش گا ہ میں رہا ئش اختیار کرنے والے موجود ہ ڈپٹی کمشنر کے علاوہ آج تک آنے والے کسی ڈپٹی کمشنر نے بھی بجلی کے بل ادا نہیں کئے جس کی وجہ سے صرف اس ایک سرکاری رہائش گاہ کے بجلی واجبات بیس لاکھ سے تجاوز کرگئے ہیں تاہم پیسکو انکوائر ی کے نتیجے میں موجودہ ڈپٹی کمشنر نے ان واجبات میں دو لاکھ روپے ادا کردےئے ہیں۔

مراسلے میں تما م سرکاری رہائش گاہوں کے ذمے بجلی کی مد واجب الادا بقایا جات 30دن کے اندر اندرادا کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے واضح کیا گیا ہے کہ پیسکو مذید اس صورت حال کوبرداشت نہیں کرے گی اور ایسے کیسز کومذید کاروائی کے لئے نیب کا ارسال کئے جائیں گے۔