بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / منشیات کی روک تھام کیلئے سخت قانونی سازی کا فیصلہ

منشیات کی روک تھام کیلئے سخت قانونی سازی کا فیصلہ

پشاور ۔ خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات و تعلقات عامہ اور آبنوشی شاہ فرمان نے کہا ہے کہ صوبہ میں آئس نامی نشہ کی روک تھام کیلئے صوبائی حکومت سخت قانون سازی کرنے جا رہی ہے۔ صوبہ کے نوجوانوں اور طالبعلموں میں آئس نامی نشہ کے استعمال میں بتدریج اضافہ انتہائی تشویش ناک اور خطرناک ہے جس کے تدارک کیلئے صوبائی حکومت سخت اقدامات اٹھانے کا ارادہ رکھتی ہے ۔ منگل کے روز سول سیکرٹریٹ پشاور میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ صوبہ کے نوجوانوں میں آئس نشہ کا استعمال انتہائی خطرناک ہے بیرون ملک سے بڑی مقدار میں مختلف، کیمیکل سے تیار ہونے والا آئس نشہ خیبر پختونخوا میں سمگل کیا جا رہا ہے جو کہ صوبہ کے نوجوانوں اور طالبعلموں کے خلاف ایک ذہریلی سازش ہے ۔

صوبائی حکومت آئس نامی نشہ کی روک تھام کو ایک چیلنج کے طور پر لے رہی ہے اور اس ضمن میں حکومت کو والدین، عوام اور تعلیمی اداروں کے سربراہان کی مدد درکار ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ آئس نامی نشہ کی روک تھام کیلئے سخت قانون سازی کے ساتھ آگاہی مہم بھی انتہائی ضروری ہے اور اس مقصد کی تکمیل کیلئے والدین اور تعلیمی اداروں کے سربراہان کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ نوجوانوں پر کڑی نظر رکھیں تاکہ بچوں کو اس جان لیوا نشہ سے بچایا جا سکے اور ان کا مستقبل محفوظ بنیا جا سکے،صوبائی وزیر اطلاعات کا مزید کہنا تھا کہ آئس نامی نشہ سمیت ہر قسم کی نشہ آوراشیاء سے اپنے بچوں کو دور رکھنا والدین اور صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ آئس نامی نشہ کا بطورفیشن بڑھتا ہوا رجحان انتہائی تشویش ناک ہے کیونکہ آئس کا نشہ ہیروئن کی جگہ استعمال کیا جاتا ہے اور اس کے انسانی جسم پر انتہائی جان لیوا اثرات مرتب ہوتے ہیں ۔ شاہ فرمان کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت بہت جلد اس موذی مرض کی فروخت اور استعمال پر پابندی عائد کرنے کا قانون منظور کرے گی۔