بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پی ٹی آئی کا وزیراعلیٰ پنجاب کیخلاف ریفرنس دائر کرنیکا اعلان

پی ٹی آئی کا وزیراعلیٰ پنجاب کیخلاف ریفرنس دائر کرنیکا اعلان

اسلام آباد ۔پاکستا ن تحریک انصاف نے وزیر اعظم نواز شریف کے بعدوزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف ، اسحاق ڈار اور ایاز صادق سے استعفے کا مطالبہ کر دیا۔ شہباز شریف کے خلاف عدالت میں ریفرنس داخل کرنے کا اعلان ۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا ہے کہ شوگر مل لگانے کی اجازت نہیں تھی تو شہبازشریف نے خود کوشوگر مل کی اجازت دے دی، جے آئی ٹی رپورٹ کو ’’عمران نامہ‘‘ قرار دینا میرے لیے اعزاز ہے۔

بنی گالہ میں منگل کے روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا شہباز شریف کے خلاف عدالت میں ریفرنس داخل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہنا تھا کہ صرف وزیر اعظم نواز شریف ہی نہیں ،وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف ،وزیر خزانہ اسحاق ڈار ،ایاز صادق بھی فوری طور پر مستعفی ہو جائیں۔

شہباز شریف کے خلاف عدالت میں ریفرنس دائر کریں گے ، صرف استعفا کافی نہیں ہے ان کا ٹھکانہ اڈیالہ جیل ہے،ہر شخص قطری کے خط کا مذاق اڑا رہا تھا،تصدیق ہو گیا کہ قطری خط فراڈہے ، شوگر مل لگانے کی اجازت نہیں تھی تو انھوں نے خود کوشوگر مل کی اجازت دے دی،جے آئی ٹی رپورٹ کے مطابق شہباز شریف کا نام التوفیق کے 8ملین ڈالر کیس میں شامل ہے۔شہباز شریف اس کیس میں دوسرا شخص ہے جس نے برطانیہ رقم منتقل کی۔ پاناما میں ہزاروں لوگوں کے نام آئے کسی ایک نے نہیں کہا کہ یہ غلط ہے ۔

شریف خاندان مسلسل جھوٹ کا سہارا لیتا رہا کہ مریم نواز بینیفیشل آنر ثابت ہو چکی ، حسین نواز اور مریم نواز کے درمیان ٹرسٹ ڈیڈ بھی جھوٹ نکلی، شریف خاندان کہتاہے کہ قطری شہزادے نے رقم فراہم کی۔لیکن جے آئی ٹی نے ان کے بیانات کو مسترد کر دیاہے۔ پہلے جے آئی ٹی پرمٹھائیاں بانٹیں پھرنوٹ نہ چلنے پر جے آئی ٹی کیخلاف ہوگئے،انہوں نے کہا کہ ہم پیر کو سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کریں گے ، نواز شریف نے پارلیمنٹ اور جے آئی ٹی میں جھوٹ بولا، اگر وہ اسے عمران نامہ کہتے ہیں تو میں اسے اعزاز سمجھوں گا ،عمران خان نے کہا کہ وزیر اعظم نوا زشریف ہی نہیں وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے بھی منی لانڈرنگ کی۔ یہ وہی شخص ہے جس نے ایس ای سی پی کا سربراہ مقرر کیا اور نیشنل بنک کے صدر کو بھی تعینات کیا جو خود منی لانڈرنگ میں ملوث ہے۔

پاناما میں ثابت ہوگیا کہ یہ پکڑے گئے ہیں،اسپیکر نے ان کا ریفرنس نہیں بھیجا،پوری پارٹی جشن منانا چاہتی ہے لیکن پیر کو سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار عمران خان نے بنی گالہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ ن لیگ لوگ نکال کے دکھائے پھر ہم لوگ نکالیں گت تو دیکھ لیں گے، نواز شریف نے پارلیمنٹ اور جے آئی ٹی میں جھوٹ بولا ہے اور مسلسل جھوٹ بول رہے ہیں لیکن جے آئی ٹی نے تصدیق کر دی ہے کہ شریف خاندان نے کرپشن اور منی لانڈرنگ سے بیرون ملک میں اثاثے بنائے ، ملک میں غریب بھوک سے مر رہے ہیں اور حکمرانوں کے اثاثے آسمانوں سے باتیں کر رہے ہیں ۔

نواز شریف نے اپنے والد کو بھی پھنسادیا ہے کیونکہ خود کو بچھانے کے لئے پورے ٹبر نے زور لگا رکھا ہے اور ملک کے اداروں کو مفلوج کیا ہوا ہے انہوں نے کہا کہ اداروں کو استعمال کر رہے ہیں اور جو ان کی بات نہیں مانتے تو سازش کا راگ الاپنا شروع کر دیتے ہیں، کسی کو کوئی ضرورت نہیں کہ وہ عمران کے خلاف سازش کرے بلکہ نواز شریف کا پورا ٹبر چوری کر تے ہوئے پکڑا گیا ہے جس کے باعث انہیں اب گھر جانا چاہیے اکیلے نواز نہیں شہباز ، اسحاق ڈاراور سپیکر ایاز صادق کو فور طور پر مستعفی ہوجا چاہیے۔ انہوں نے مسلم لیگ ن کے وزرا ء کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ہر روز چار پانچ لو گ چوروں کو بچانے کے لئے آ جاتے ہیں اور اس طرح چور کو بچانے والے بھی چور ہی ہوتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جلد حکمران جیلوں میں ہو نگے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ن لیگ والے جے آئی ٹی اسے عمران نامہ کہتے ہیں تو میں اسے اعزاز سمجھوں گامجھ سے عدالت جو بھی مانگے گی میں دو نگا اور ہر حال میں اس کی فراہم کرونگا۔عمران خان کی پریس کانفرنس کے بعد بنی گالا میں مٹھائی تقسیم کی گئی۔