بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پاک چین ٹرینوں کی تعداد بڑھانے پرمتفق

پاک چین ٹرینوں کی تعداد بڑھانے پرمتفق

اکستان ریلویز اور چین کے نیشنل ریلویز ایڈمنسٹریشن کے درمیان کراچی سے پشاور تک ریلوے ٹریک کی اپ گریڈیشن کی تفصیلات طے کرلی گئیں جبکہ موجود 32 ٹرینوں کی تعداد کو بڑھا کر 171 کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا۔

پاکستان اور چینی حکام کے درمیان ہونے والے اجلاس میں پاکستان ریلویز کے چیف ایگزیکٹیو افسر (سی ای او) محمد جاوید انور کی سربراہی میں ٹیم لیڈر سی پیک اشفاق خٹک سمیت اعلیِ افسران شریک ہوئے جبکہ چین کی نیشنل ریلویز ایڈمنسٹریشن کے وفد کی قیادت زینگ ہونگ بو نے کی، چینی وفد میں کنسلٹنٹ اور ماہرین بھی شامل تھے۔

پاکستان ریلویز کے سی ای او محمد جاوید کا کہنا تھا کہ کراچی سے پشاور تک ریلوے ٹریک کی اپ گریڈیشن کا کام دو مرحلوں میں مکمل کیا جائے گا جبکہ ٹریک کو ڈبل کر دیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ریلویزاس وقت 65 کلومیٹر سے 110 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ٹرینیں چلا رہا ہے لیکن ٹریک کی اپ گریڈیشن کے بعد یہ رفتار کم از کم 110 اور زیادہ سے زیادہ 160 کلومیٹر فی گھنٹہ ہو جائے گی۔

محمد جاوید کا کہنا تھا کہ پاکستان ریلویز میں دوسری جنگ عظیم کے بعد پہلی مرتبہ ریلوے کی اپ گریڈیشن اور ماڈرنائزیشن کا عمل شروع ہو رہا ہے۔

سی ای او پاکستان ریلویز کا کہنا تھا کہ 2655 کلومیٹر طویل ٹریک کو اپ گریڈ، 364 کلومیٹر ٹریک کو اوورہال اور 814 کلومیٹر ٹریک کو مکمل نیا بنایا جائے گا اور 2700 پل، 550 موڑ اور 11 ٹنلز اپ گریڈ ہوں گی، 160 کلومیٹر فی گھنٹہ رفتار والے ٹریک کو فینسنگ کے ذریعے محفوظ بنایا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ کمپیوٹر بیسڈ انٹرلاکنگ سسٹم، آٹو بلاک سگنلنگ، آٹو میٹک ٹرین پروٹیکشن، ایڈوانس روڈ وارننگ اور سینٹرلائزڈ ٹریفک کنٹرول کا ماڈرن سسٹم لگایا جائے گا۔

پاکستان اور چینی حکام کے اجلاس میں طے پایا کہ ایم ایل ون پر کراچی سے پشاور کے درمیان چلنے والی 32 ٹرینوں کی تعداد اور گنجائش 171 ٹرینوں تک بڑھا دی جائے گی۔

اجلاس میں کراچی سے حیدر آباد تک موجودہ ٹریک کی اپ گریڈیشن کے علاوہ ایک نیا اور متبادل ٹریک بھی بچھایا جائے گا اور لوکوموٹیوز، رولنگ اسٹاک کے علاوہ والٹن اکیڈمی کی اپ گریڈیشن بھی کی جائے گی۔