بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / پاکستان میں عدم استحکام امریکہ اور دنیا کے لیے خطرناک ہو سکتا ہے

پاکستان میں عدم استحکام امریکہ اور دنیا کے لیے خطرناک ہو سکتا ہے

واشنگٹن ۔پاکستان میں عدم استحکام امریکہ اور دنیا کے لیے خطرناک ہو سکتا ہے، نواز شریف بھارت کے ساتھ کشیدگی کو کم کرنے کی کوششوں میں ناکام رہے،نواز شریف اور اسٹیبشلمنٹ کے درمیان چار برسوں میں زیادہ بہتر تعلقات نہیں رہے،پانامہ پیپرز سکینڈل میں ملٹری اسٹیبلشمنٹ نے خود کو الگ رکھا لیکن جے آئی ٹی میں فوج کی نمائندگی رہی ،یمن جنگ اور سعودی قطر تنازعہ میں پاکستان غیر جانبدار رہا۔وزیراعظم نوازشریف کی اس غیر جانبدارانہ پالیسی کی وجہ سے ریاض اور اسلام آباد کے تعلقات کشیدہ ہوئے ۔

امریکہ کے سابق صدر کے مشیر بروس ریڈل اپنے مضمون میں لکھتے ہیں کہ پاکستان میں عدم استحکام امریکہ اور دنیا کے لیے خطرناک ہو سکتا ہے بروس ریڈل نے پاکستان کی صورتحال پر ایک مضموں میں پانامہ پیپرز سکینڈل کے بعد وزیراعظم نواز شریف اور ان کے خاندان کو درپیش مشکلات کا ذکر کیا ہے اپنے تبصرے میں بروس ریڈل نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ کے موقف کے برعکس نواز شریف بھارت کیساتھ تعلقات بہتر کرنے، افغان طالبان کو کابل حکومت سے مذاکرات کرنے، یمن سعودی جنگ سے پاکستان کو باہر رکھنے اور سعودی قطر تنازعہ میں غیر جانبدار رہنے کو ترجیح دیتے رہے ۔

نواز شریف بیجنگ کے ساتھ 50 ارب ڈالرز کے معاہدے کرنے میں کامیاب رہے انہوں نے عسکری اداروں کو سویلین کنٹرول میں رکھنے کی جدوجہد کی لیکن نواز شریف بھارت کے ساتھ کشیدگی کو کم کرنے کی کوششوں میں ناکام رہے۔

نواز شریف اور اسٹیبشلمنٹ کے درمیان چار برسوں میں زیادہ بہتر تعلقات نہیں رہے ۔پانامہ پیپرز سکینڈل میں ملٹری اسٹیبلشمنٹ نے خود کو الگ رکھا لیکن جے آئی ٹی میں فوج کی نمائندگی رہی ،بروس ریڈل نے اپنے مضمون میں لکھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مئی میں دورہ سعودی عرب کے دوران نواز شریف سے دوطرفہ ملاقات سے گریز کیا جسے اسلام آباد میں سرد مہری کا اشارہ سمجھ کر پیش کیا گیا۔