بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / اسحاق ڈار کی جے آئی ٹی تحقیقات پر شدید تنقید

اسحاق ڈار کی جے آئی ٹی تحقیقات پر شدید تنقید

اسلام آباد۔وفاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے جے آئی ٹی رپورٹ پر اعتراضات دائر کرتے ہوئے جے آئی ٹی تحقیقات کو بدنیتی پر مبنی قراردے دیا۔ طارق حسن ایڈووکیٹ کے توسط سے دائر کئے گئے اعتراضات میں کہا گیا ہے کہ عدالتی حکم میں میرے ٹیکس گوشواروں کا کوئی تذکرہ نہیں تھا اور درخواست گزار نے بھی ٹیکس گوشواروں پر اعتراض نہیں کیاتھا لیکن جے آئی ٹی نے مینڈیٹ سے تجاوز کی وجوہات نہیں بتائیں اعتراض میں کہا گیا ہے کہ جے آئی ٹی کایہ کہنا کہ ٹیکس گوشوارے نہیں ملے بدنیتی پر مبنی ہے ۔

جے آئی ٹی کو پیشی کے روز ہی تمام ریکارڈ فراہم کردیاتھا ریکارڈ کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہاگیا ہے کہ سال2001-2کانیب کے پاس موجود ریکارڈ 8جولائی کوفراہم کردیاتھا لیکن اس نے اثاثے چھپانے اور ٹیکس چوری کابے بنیاد الزام لگایا ۔ عدالت کو بتایا گیا ہے کہ جے آئی ٹی نے آمدن اور اثاثوں سے متعلق کوئی سوال نہیں کیا جبکہ نیب کو آمدن سے زائد اثاثوں کی تحقیقات میں کچھ نہیں ملا تھا اس لئے انکوائری بند کرنی پڑی اعتراضات میں کہا گیا ہے کہ ان کے پاس آمدن اوراثاثوں کا تمام ریکارڈ موجود ہے جبکہ جے آئی ٹی نے عطیہ کی ہوئی رقم پر ٹیکس معاف کروانے کاالزام عائد کیا۔

اسحاق ڈار نے عدالت سے جے آئی ٹی رپورٹ مسترد کرنے کی استدعاکرتے ہوئے کہا ہے کہ اثاثوں میں اضافے کے متعلق پوچھاجاتاتوجواب ضرور دیتاانہوں نے بتایا ہے کہ 2003سے 2008تک نان ریذیڈنٹ پاکستانی تھااور 2003سے2005تک 8.2ملین پاونڈ کمائے جبکہ اسی عرصے کے دوران 1.56 ملین بیٹے کوتحفے میں دئیے اسحاق ڈار نے کہاکہ بیرون ملک کمائی گئی آمدن قانونی طور پر پاکستان میں ظاہر کرنے کے پابند نہیں۔