بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / غیر قانونی لکڑی افغان ٹمبر کے طور پر فروخت کا انکشاف

غیر قانونی لکڑی افغان ٹمبر کے طور پر فروخت کا انکشاف

پشاور ۔چترال کے جنگلات سے غیر قانونی طور پر کاٹی گئی کروڑوں روپے مالیت کی قیمتی لکڑی افغان ٹمبر کے طور پر ظاہر کر کے فروخت کر نے کا انکشاف ہوا ہے ٗقانون نافذ کر نے والے ادارو ں نے کاروائی کر کے12500 مکعب فٹ لکڑی ضبط کر لی اور ساڑھے 47 لاکھ روپے کا تاوان بھی وصول کیا ٗمحکمہ جنگلات نے باجوڑ سے اضلاع کو لکڑی کی ترسیل روکنے کے لئے 1998 ء کی پالیسی معطل کر نے کی سفارش کی ہے ۔

محکمہ جنگلات کے ذرائع کے مطابق صو بائی حکو مت کے نوٹس میں یہ بات لائی گئی ہے کہ چترال کے جنگلات سے غیر قانونی طور پر کاٹی گئی لکڑی کو افغان ٹمبر ظاہر کر کے مارکیٹ میں فروخت کیا جا رہا ہے ٗچونکہ ضلع چترال کا جنوب مغربی حصہ افغان سر حد کے ساتھ ملتا ہے اور بیشتر جنگلات ارندو سے 20 سے25 کلومیٹر دور ہیں اور وہاں تک جانے کے لئے کوئی باقاعدہ راستہ نہیں ہے ٗ علاقائی قبائل کا مہتر چترال کے ساتھ رائلٹی کا تنازعہ ہے جس کی وجہ سے وہ لو گ جنگلات کی غیر قانونی کٹائی اور سمگلنگ میں ملوث ہیں ۔

یہ غیر قانونی لکڑی پہاڑو ں سے لاگو عارضی طور پر زیریں دیر میں سٹور کی جاتی ہے بعد ازاں باجوڑ لے جایا جاتا ہے جہاں سے پولٹیکل انتظامیہ باجوڑ سے دوسرے اضلاع ترسیل کا پرمٹ حاصل کیا جاتا ہے ٗاس طرح غیر قانونی لکڑی کو افغان ٹمبر ظاہر کر کے قانو نی تحفظ حاصل کیا جاتا ہے ٗمحکمہ جنگلات نے صو بائی حکو مت سے سفارش کی ہے کہ باجوڑ ایجنسی سے اضلاع کو لکڑی کی ترسیل کی مروجہ پالیسی 1998 ء کو معطل کیا جائے ۔