بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / پاکستان پر دہشت گردوں کیخلاف کاروائی نہ کرنے کا الزام

پاکستان پر دہشت گردوں کیخلاف کاروائی نہ کرنے کا الزام

واشنگٹن۔امریکہ نے ایک مرتبہ پھر پاکستان پر انتہاپسندوں کے خلاف مناسب کارروائی نہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ ان دہشت گردوں کی پاکستان میں محفوظ پناہ گاہیں جو افغان اور امریکی فورسز کے لیے خطرہ ہیں۔ امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے جاری کردہ ایک سالانہ رپورٹ میں کہا گیا کہ اسلام آباد افغان طالبان اور حقانی نیٹ ورک کی طاقت کو کم کرنے کے لیے ان کے خلاف خاطر خواہ کارروائی کرنے میں ناکام رہا ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ افغان طالبان، حقانی نیٹ ورک، لشکر طیبہ اور جیش محمد ایسے گروپس ہیں جن کی محفوظ پناہ گاہیں پاکستان میں موجود ہیں جبکہ ان گروپوں کی توجہ سرحد پار دہشت گرد کارروائیوں پر مرکوز ہے۔رپورٹ میں الزام لگایا گیا کہ حکومت پاکستان نے جیش محمد اور لشکر طیبہ کی میڈیا کوریج پر پابندی کے علاوہ ان تنظیموں کے خلاف بھی موثر کارروائی نہیں کی۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ لشکر طیبہ اور جیش محمد پاکستان میں ریلیاں منعقد کرتی ہیں، رقوم جمع کرتی ہیں، لوگوں کو بھرتی کرتی ہیں اور انہیں (جہادی)تربیت بھی دیتی ہیں۔رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا کہ حکومت پاکستان شدت پسند تنظیم داعش کو شکست دینے کے لیے عالمی اتحاد کا حصہ نہیں ہے لیکن پاکستان 2015 میں داعش کو دہشت گرد تنظیم قرار دے چکی ہے جبکہ پاکستانی پولیس اور سیکیورٹی فورسز نے بڑی تعداد میں داعش سے تعلق رکھنے والے دہشت گردوں کو گرفتار اور قتل کیا۔