بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / امریکی فوج میں خواجہ سراؤں کی بھرتی پر پابندی

امریکی فوج میں خواجہ سراؤں کی بھرتی پر پابندی

واشنگٹن۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فوج میں خواجہ سراؤں کی بھرتی پر مکمل پابندی کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ فوج میں کسی بھی شعبے یا عہدے پر مخنث افراد کو بھرتی کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔امریکی میڈیا کے مطابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کہا کہ انہوں نے اپنے عسکری ماہرین اور فوجی جنرلز سے مشاورت کے بعد فیصلہ کیا ہے کہ امریکی حکومت فوج میں کسی بھی شعبے یا عہدے پر مخنث افراد کو بھرتی کرنے کی اجازت نہیں دے گی۔

ٹرمپ نے اپنی ٹوئٹ میں مزید کہا کہ ہماری مسلح افواج کو اپنی فیصلہ کن اور زبردست کامیابیوں پر توجہ مرکوز رکھنی چاہیے اور ان پر بے پناہ میڈیکل اخراجات کا بوجھ نہیں ڈالنا چاہیے اور ان کارکردگی میں خلل نہیں آنا چاہیے جیسا کہ مخنثوں کی موجودگی سے ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ براک اوباما کے دور میں اس بات کا فیصلہ کیا گیا تھا کہ مخنث افراد امریکی فوج میں کھل کر کام کرسکتے ہیں تاہم رواں ماہ کے آغاز میں وزیر دفاع جیمز میٹس نے فوج میں مخنثوں کی بھرتی 6 ماہ کے لیے موخر کرنے کی منظوری دی تھی۔ ریپبلکن پارٹی کے بعض ارکان نے بھی خواجہ سراں کی فوج میں بھرتی پر مکمل پابندی کا مطالبہ کیا تھا۔