بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / قبائلی پوزیشن ہولڈر طلباء میں لیپ ٹاپ تقسیم

قبائلی پوزیشن ہولڈر طلباء میں لیپ ٹاپ تقسیم

پشاور ۔ گورنرخیبرپختونخوا انجینئراقبال ظفرجھگڑا نے کہاہے کہ جدیددور سے ہم آہنگ اعلیٰ اورمعیاری تعلیم کے حصول سے ہی قومیں ترقی کرتی ہیں اورقبائلی علاقوں میں شرح خواندگی بڑھانے کیلئے موجودہ حکومت کی جانب سے ٹھوس اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ قبائلی نوجوان صلاحیتوں کے اعتبارسے کسی سے کم نہیں جوکہ نہ صرف فاٹا بلکہ پورے ملک کی تقدیر سنوارنے میں کلیدی کردار اداکرسکتی ہے۔وہ بدھ کے روز گورنرہاؤس پشاورمیں وزیراعظم لیپ ٹاپ سکیم کے تحت قبائلی طلباء کو لیپ ٹاپ دینے کی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ تقریب میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری فاٹا، قبائلی طلباء اوراساتذہ نے شرکت کی۔اس موقع پر تمام ایجنسیوں کے پوزیشن ہولڈرز طلباء میں لیپ ٹاپ تقسیم کئے گئے۔

گورنرنے کہاکہ حکومت زندگی کے ہرمیدان میں خصوصاً تعلیم کے شعبے میں نمایاں کامیابی ممکن بنانے کیلئے ٹھوس حکمت عملی پر کارفرماہے اور فاٹا کے ہربچے کو زیورتعلیم سے آراستہ کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ فاٹاکے سکولوں میں اساتذہ کی کمی پوری کرنے کیلئے اساتذہ بھرتی کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ قومی سکیموں میں شرکت فاٹا کو قومی دھارے میں لانے کی جانب اہم قدم ہے ۔ گورنرنے کہاکہ 97 فیصد ٹی ڈی پیز واپس اپنے علاقوں میںآباد کر دیے گئے ہیں اوررہ جانیوالے ٹی ڈی پیز بھی جلد اپنے اپنے علاقوں کو واپس چلے جائیں گے۔

انہوں نے کہاکہ قبائلی علاقوں کوترقی کے قومی دھارے میں لانے کیلئے فاٹامیں اصلاحات لائے جارہے ہیں اور بہت جلد فاٹامیں اصلاحات نافذ کئے جائیں گے۔ دریں اثناء محکمہ تعلیم فاٹا کی جانب سے گورنرخیبرپختونخوا انجینئراقبال ظفرجھگڑا کوقبائلی طلباء کوسکالرشپ دینے کے حوالے سے ایک تفصیلی بریفنگ دی گئی۔اجلاس میں سیکرٹری سوشل سیکٹر ڈیپارٹمنٹ فاٹا یوسف رحیم ، ڈائریکٹرایجوکیشن فاٹا اوردیگرمتعلقہ حکام بھی موجود تھے۔ اجلاس کو بتایاگیاکہ49 ہزارقبائلی طلباء کوہرسال ان لینڈسکالرشپ کے ذریعے سکالرشپ دیے جارہے ہیں۔اجلاس کو مزید بتایاگیاکہ مختلف کیڈٹ کالجو ں میں زیرتعلیم 1475 طلباء کوبھی سکالرشپ دیے جارہے ہیں اور11 کور کی جانب سے2000 قبائلی طلباء کوبھی مفت تعلیم دی جارہی ہے۔ اس موقع پرگفتگوکرتے ہوئے گورنرنے کہاکہ قبائلی طلباء کو سکالرشپ دیتے وقت میرٹ اور شفافیت کا خاص خیال رکھاجائے تاکہ مستحق طلباء کو ان کا حق دیاجاسکے۔